عجیب و غریب

سرحد پر واقع اے ٹی ایم کو’ ڈیٹونیٹر ‘سے اڑایا، نقد لوٹ کر 3 مجرم فرار

ساگر ؍ دموہ،18مئی (آئی این ایس انڈیا) لاک ڈاؤن کے دوران دموہ-پننا روڈ پر مجرموں نے ڈیٹونیٹر لگا کر اے ٹی ایم مشین کو اڑا دیا ہے۔اس گاؤں میں دہشت کا ماحول ہے۔دیہی واقعہ کے بعدکافی ڈرے ہوئے ہیں۔پولیس مجرموں کی گرفتاری کے لئے چھاپے ماری کر رہی ہے۔دراصل رات کے 9 بجے تھے، گاؤں میں سناٹا تھا۔اسی دوران تیز دھماکہ کی آواز سن کر باہر نکلتے ہیں اور دیکھتے ہیں کہ اے ٹی ایم میں زوردار دھماکے ہوا ہے۔دیہی کے پاس پہنچتے ہی وہاں موجود نوجوان لوگوں کو ڈرانے، دھمکانے لگتا ہے،جسے دیکھ بھگدڑ مچ جاتی ہے۔اسی درمیان اے ٹی ایم سے نکلی نقد لوٹ کر موٹر سائیکل سے 3 ڈاکو فرار ہو جاتے ہیں۔لاک ڈاؤن کے درمیان سامنے آئی واردات کے بعد پولیس نے ہائی الرٹ جاری کر دیا،پوری رات ناکہ بندی کردی ۔دموہ اورپننا کی پولیس ڈاکوؤں کو ڈھونڈتی رہی، لیکن وہ ہاتھ نہیں آ سکے۔پیر کی شام تک بھی پولیس کو کوئی سراغ نہیں مل سکا ہے،اگرچہ نشاندہی کی بنیاد پر پولیس نے شناخت کے لئے کچھ پوائنٹ ضرورشیئرکئے ہیں۔

معاملہ مدھیہ پردیش کے دموہ ضلع کی سرحد پر آباد ہنوتاکلا گاؤں کا ہے۔دموہ-پننا اسٹیٹ ہائی وے پر یہ ضلع کا آخری گاؤں ہے،اس کے بعد سمریا تھانہ شروع ہو جاتا ہے جو پاس ضلع میں آتا ہے،جس اے ٹی ایم کو ڈاکوؤں نے نشانہ بنایا ہے، وہ بھی ہائی وے پر ہی واقع ہے۔واردات کے بعد تھانہ پولیس معاملے کی تحقیقات میں مصروف ہو گئی ہے۔وہیں ڈاکوؤں نے جس انداز میں واردات کو انجام دیا، اس کے بعد دیہاتیوں میں خوف و ہراس کا ماحول ہے۔

بتایا گیا ہے کہ 3 نوجوان اچانک موٹر سائیکل سے آتے ہیں اور براہ راست اے ٹی ایم میں جا گھستے ہیں،کچھ دیر میں ہی اے ٹی ایم بوتھ میں ڈیٹونیٹر نصب کیا جاتا ہے، اس کے بعد دھماکے کا انتظار،دھماکہ ہونے کے فوری بعد تینوں نوجوان دوبارہ اے ٹی ایم کے پاس پہنچتے ہیں،جہاں اڑ رہے روپے اور پڑے نقد جمع کرنے کے بعد فرار ہو جاتے ہیں۔اس دوران یہاں پہنچنے کی کوشش کرنے والے لوگوں کو ہتھیار دکھا کر دھمکایا جاتا ہے،لوٹ مار کرنے کے بعد ان کا اب تک پتہ نہیں لگ سکا ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close