عجیب و غریب

مدھیہ پردیش کے اندور میں پرچم کشائی سے پہلے کانگریس لیڈران کے درمیان جم کر ہاتھاپائی

اندور،26جنوری (ایچ یو ٹی ذرائع) پورا ملک یوم جمہوریہ کا جشن منا رہا ہے۔دنیا نے راج پتھ سے ہندوستان کی طاقت کا نظارہ دیکھا،دنیا کے کئی ممالک میں ہندوستانی سفارت خانے پر دھوم دھام سے یوم جمہوریہ منایا گیا۔دوسری طرف ایک تصویر مدھیہ پردیش کے اندور سے بھی سامنے آئی ہے۔ملی معلومات کے مطابق، یہاں کانگریس دفتر میں پرچم کشائی کے پروگرام میں وزیر اعلی کمل ناتھ کی طرف سے پرچم لہرایا جانا تھا، مگر اس سے پہلے ہی پروگرام میں دو کانگریسی لیڈر آپس میں بھڑ گئے،ان کے درمیان جم کر ہاتھاپائی ہوئی۔پولیس نے کسی طرح دونوں کو الگ کیا، ہاتھا پائی کی ویڈیواب سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے۔

معاملہ مدھیہ پردیش کے اندور کا ہے۔یہاں کانگریس دفتر گاندھی بھون میں پرچم کشائی پروگرام کا انعقاد کیا گیا تھا،پرچم لہرانے کے لیے وزیر اعلی کمل ناتھ کو آنا تھا۔کانگریسی کارکن بیتابی سے وزیراعلی کے آنے کا انتظار کر رہے تھے۔اسی دوران کانگریس لیڈر دیویندر سنگھ یادو اور چندو کجیرکے درمیان کسی بات کو لے کر جھگڑا شروع ہوگیا اور دیکھتے ہی دیکھتے بات اتنی بگڑ گئی کہ دونوں کے درمیان ہاتھا پائی شروع ہو گئی،وہاں موجود کارکنوں اور پولیس نے مداخلت کرتے ہوئے دونوں لیڈروں کو الگ کیا،فی الحال صاف نہیں ہو پایا ہے کہ دیویندر سنگھ یادو اور چندو کجیر کے درمیان کس بات کو لے کر جھگڑا شروع ہوا تھا۔پروگرام میں موجود کچھ لوگوں نے اس واقعہ کو اپنے کیمرے میں قید کر لیا، جو بعد میں سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔

اس واقعہ کے بعد پولیس نے دونوں لیڈران اور ان کے حامیوں کو پروگرام مقام سے باہر کر دیا،کچھ ہی دیر بعد سی ایم کمل ناتھ وہاں پہنچے اور پرچم کشائی کی۔وزیر اعلی کا استقبال کرنے کو لے کر بھی کانگریسی لیڈروں کے درمیان دھکا مکی کی خبر ہے۔ریاست کے سابق سربراہ شیوراج سنگھ چوہان نے ٹوئٹر کے ذریعے ہاتھا پائی کے اس واقعہ پر طنز کسا ہے۔غور طلب ہے کہ مدھیہ پردیش میں کانگریس حکومت بننے کے بعد یہ پہلی بار تھا جب اندور میں کوئی بڑا پروگرام منعقد کیا گیا تھا،ایسے میں مقامی رہنماؤں کے درمیان لڑائی کی خبر گروپ بندی کی طرف صاف اشارہ کر رہی ہے ۔ بتاتے چلیں کہ وزیر اعلی ڈیووس میں ہوئی ورلڈ اکنامک فورم کے اجلاس میں شرکت کرنے کے بعد گزشتہ ہفتہ ہی ملک واپس آئے ہیں۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close