بہار

’طلبہ مدارس احساس کمتر ی سے باہرنکلیں‘مدرسہ دارالسلام مونگیرمیں مولانامحمدشارب ضیاء رحمانی کاخطاب

مونگیر (ہندوستان اردو ٹائمز) علوم دینیہ کے حصول میں مصروف طلبہ اپنے آپ کوہرگزکمترنہ سمجھیں،وہ اللہ اوراس کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے علوم کواپنے سینہ میں جمع کررہے ہیں،قرآن مجیدکے لیے کسی بھی طرح کی مصروفیت اجرکاباعث ہے۔یہ اللہ کااحسان ہے کہ اس نے تعلم وتعلیم قرآن کے لیے آپ کومنتخب کیا۔یہ نعمت ہرایک کونہیں ملتی ۔ان خیالات کااظہار مولانا محمد شارب ضیاء رحمانی،صحافی( دہلی) نے مدرسہ دارالسلام اکرام نگر،بینی گیرمونگیرمیں طلبہ واساتذہ سے خطاب میں کیا۔

انہوں نے اپنے خطاب میں مزیدکہاکہ اللہ تعالیٰ نے سورہ رحمن میں علم قرآن کواپنے احسان کے طورپرذکرکیاہے۔آپ جوعلوم حاصل کررہے ہیں یہ دنیاوآخرت دونوں جگہ کامیابی کے ضامن ہیں۔طلبہ مدارس احساس کمتری سے باہرنکلیں،ان میں بے پناہ صلاحیتیں ہوتی ہیں ،علوم دینیہ کی تکمیل کے بعدوہ جس راہ کومنتخب کرناچاہیں وہ کرسکتے ہیں۔ وہ جوراہ اختیارکرناچاہیں، کریں لیکن دین متین کی خدمت ہمیشہ ملحوظ رہے ۔آپ کے والدین نے بڑی امیدوں کے ساتھ آپ کوبھیجاہے،آپ ایک ایک لمحہ کوغنیمت جان کراس کااستعمال علم کے حصول میںکریں۔ انہوں نے مدرسہ دارالسلام کے حسن انتظام اورکارکردگی کی تحسین کرتے ہوئے مزیدکہاکہ مولاناقمرالزماں رحمانی صاحب نے یہاں علم کی ایسی شمع روشن کی ہے،جس کی عرصہ سے ضرورت محسوس کی جارہی تھی،ہم سب کے مرشدمفکراسلام حضرت مولانامحمدولی رحمانیؒ کی توجہ اوران کی دعائیں اس ادارہ کے ساتھ رہی ہیں۔عوام وخواص کوچاہیے کہ اس ادارہ کے وسائل کی طرف توجہ دیں تاکہ ادارہ مزیدترقی کی راہیں طے کرتارہے۔

اس موقعہ پرجامعہ رحمانی کے شعبہ صحافت کے سربراہ جناب فضل رحمن رحمانی نے ادارہ کے ذمہ داران کی محنت کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ اسی کانتیجہ ہے کہ یہ پودااب تناوردرخت بن رہاہے۔مولاناقمرالزماں رحمانی نے اس علاقہ پرزبردست محنت کی ہے،وہ کافی فعال اورسرگرم ہیں،ان کی بڑی قربانی ہے کہ انہوں نے اپنے علاقہ کی زمین فروخت کرکے یہاں ادارہ کی بنیادڈالی ۔اللہ تعالیٰ انہیں اس کااجردے ۔ آمین۔ جناب فضل رحمان رحمانی نے مزیدکہاکہ یہاں طلبہ واساتذہ کی محنت ولگن کودیکھ کربڑی خوشی ہوئی،اللہ تعالیٰ اس محنت کوکامیاب کرے۔مولاناقمرالزماں رحمانی نے مدرسہ کامعائنہ کراتے ہوئے کہاکہ حضرت مولانامحمدولی رحمانی علیہ الرحمہ کی خصوصی توجہ حاصل رہی ہے،حضرتؒ کے مشورہ سے اس ادارہ کاقیام عمل میں آیا،اورحضرت علیہ الرحمہ نے ہی اس کاافتتاح 2015میں کیا۔اب موجودہ امیرشریعت حضرت دامت برکاتہم کی رہنمائی میں ادارہ ترقی کی جانب گامزن ہے ۔مستقل دارالاقامہ کی تعمیرہوچکی ہے، مدرسہ کی خالی جگہ پربھی جلدتعمیرکاارادہ ہے جوان شاء اللہ مخلصین ومحبین کے توسط سے پوراہوگا۔پروگرام میں جامعہ رحمانی کے شعبہ صحافت کے طالب علم مولوی محمدشاہدرحمانی بھی شریک تھے۔نیزاس موقعہ پرمدرسہ دارالسلام بینی گیرکے اساتذہ مولاناقمرالزماں رحمانی،مولاناعبدالمالک قاسمی،حافظ محمدثناء اللہ رحمانی بھی تشریف فرما تھے۔ واضح ہوکہ مولانامحمدشارب ضیاء رحمانی جامعہ رحمانی کے شعبہ صحافت کی خصوصی دعوت پرمونگیرآئے ہوئے تھے جہاں انہوں نے مختلف پروگراموں سے خطاب کیا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button