دہلیقومی

شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے دفترمیں مشاورتی میٹنگ اور علمی و ادبی اور سماجی شخصیات کا اظہار خیال

نئی دہلی ۷؍اگست ۲۰۲۲ء (ہندوستان اردو ٹائمز) شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے دفتر کاکا نگر میں ایک مشاورتی میٹنگ کا انعقاد عمل میں آیا، جس میں شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے چیئرمین مولانا عطاء الرحمن قاسمی نے اپنے تمہیدی کلمات میں جہاں شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کی جانب سے اب تک کی گئی علمی سرگرمیوں کا اجمالی ذکر کیا، وہاں انسٹی ٹیوٹ کے مخلصین محمود سعید بلالی، مونس الرحمن قدوائی، ڈاکٹر عبدالحلیم ، پروفیسر سلیم قدوائی اور پروفیسر خالد محمود صاحبان کی کرم فرمائیوں اور حوصلہ افزائیوں کا شکریہ ادا کیا۔

انڈیا اسلامک کلچر سینٹر کے صدر سراج الدین قریشی صاحب نے شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے حالیہ مطبوعہ ’’تعارف نامہ‘‘ کو بغور ملاحظہ کیا۔ اور اس میں موجود اکابر ملت کے وقیع تاثرات اور اس کے سیمیناروں اور اجلاسوںمیں موجود قومی وملی مقتدر شخصیات کی تصویروں کو دیکھ کر خوشگوار حیرت کا اظہار کیا۔ اور فرمایا کے انسٹی ٹیوٹ کے زیر غور کام کو بہت پہلے ہو جانا چاہئے تھا۔

پدم شری پروفیسر اختر الواسع نے کہا شاہ ولی اللہ محدث دہلویؒ ایک بھاری پتھر ہیں جسے سبھی چومتے ہیں مگر اٹھانے کی ہمت مولانا عطاء الرحمن قاسمی نے کی ہے انہوں نے کہا کہ نامساعد حالات میں حوصلہ بلند رکھنا ہی ولی اللہی مشن رہا ہے اور شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے علمی کاموں کو سراہا۔
جامعہ ملیہ اسلامیہ کے سابق شعبہ اردو کے صدر اور دہلی اردو اکادمی کے وائس چیئرمین پروفیسر خالد محمود نے شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے متنوع تحقیقی کاموں پر حیرت واستعجاب کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایک چھوٹی سی جگہ سے ایک بڑا کام ہوا ہے اور ہو رہا ہے۔ میں انسٹی ٹیوٹ کی متنوع علمی کتابوں کو دیکھ کر حیرت زدہ ہوں، اگر میںیہاں نہ آیا ہوتا تو مجھے انسٹی ٹیوٹ کے علمی کاموں کی وسعت کا صحیح علم نہ ہوتا۔
نبی کریم دہلی کے مشہور سماجی و ملی کارکن مولانا عبدالسبحان قاسمی نے کہا کہ موجودہ حالات کے تناظر میں انسٹی ٹیوٹ کے دفتر کے لیے ایک مناسب قطعہ آراضی کا حصول کی اشد ضرورت ہے ،جس کے لیے انسٹی ٹیوٹ کے موجودہ دفتر میں نمائندہ شخصیات پر مشتمل ایک اور اجتماع منعقد کرنا چاہیے اور ان کے سامنے اس ملی ضرورت کو رکھنا چاہیے ۔

مولانا انیس الرحمن قاسمی نائب صدر ملی کو نسل مولانا افتخار حسین مدنی ، شیخ الحدیث مدرسہ عبدالرب اور شرافت انجینئر نے بھی شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے کاموں کو سراہااور ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا ان کے علاوہ دلاویز،عتیق الرحمن،عبدالرحمن اور عماد الرحمن وغیرہ موجود تھے ۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button