یوپی

سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو اور اعظم خان نے لوک سبھا سے استعفیٰ دیا

یوپی،22؍مارچ (ہندوستان اردو ٹائمز) سماج وادی پارٹی کے صدر اکھلیش یادو نے منگل کو لوک سبھا اسپیکر اوم برلا سے ملاقات کرکے پارلیمنٹ کی رکنیت سے اپنا استعفیٰ پیش کر دیا ہے۔ وہ 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں اعظم گڑھ سے جیت کر پارلیمنٹ پہنچے تھے۔ نیز پارٹی لیڈر اعظم خان نے بھی پارلیمنٹ کی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا ہے۔

اکھلیش یادو نے پہلی بار یوپی اسمبلی انتخابات میں کرہل سیٹ سے قسمت آزمائی تھی۔ اب انہوں نے لوک سبھا کی رکنیت سے استعفیٰ دے کر اسمبلی میں اپوزیشن کا کردار ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اہم بات یہ ہے کہ اکھلیش یادو نے کرہل سیٹ پر اپنے حریف بھارتیہ جنتا پارٹی کے امیدوار کو 67 ہزار 504 ووٹوں کے فرق سے شکست دی تھی۔

اکھلیش کے خلاف بی جے پی نے کرہل سیٹ سے مرکزی وزیر ایس پی بگھیل کو میدان میں اتارا تھا۔ انہیں 80 ہزار 692 ووٹ ملے۔ کرہل سیٹ کو سماج وادی پارٹی کا گڑھ سمجھا جاتا ہے۔1993 سے کرہل سیٹ پر سماج وادی پارٹی جیت رہی ہے۔ لیکن 2002 میں یہاں بی جے پی نے کامیابی حاصل کی تھی۔ اس بار کے اسمبلی انتخابات میں ایس پی اکھلیش یادو کی قیادت میں بڑی اپوزیشن پارٹی بن کر ابھری تھی۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button