بنگال

سبزیاں ہندو ہوئیں، بکرا مسلماں ہو گیا، محمد زبیر کی گرفتاری پر مہوا موئترا کا ٹوئٹ

بنگال 28جون (ہندوستان اردو ٹائمز) مبینہ طور پر مذہبی جذبات مجروح کرنے کے نام نہاد الزام میں دہلی پولیس کے ذریعہ پیر کے روز گرفتار آلٹ نیوز کے شریک بانی محمد زبیر کی حمایت میں اپوزیشن کے کئی لیڈران کا بیان سامنے آ چکا ہے۔ ترنمول کانگریس کی رکن پارلیمنٹ مہوا موئترا نے بھی اس تعلق سے مرکزی حکومت اور دہلی پولیس کی کارروائی پر سوال اٹھایا ہے۔مہوا موئترا نے محمد زبیر کو ’فیکٹ چیکر‘ بتاتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی گرفتاری افسوسناک ہے۔

انھوں نے ایک ٹوئٹ میں لکھا ہے کہ زبیر ایک فیکٹ چیکر ہیں اور جمہوریت کا اہم حصہ غلط خبروں کو ختم کرنا ہوتا ہے۔ وہ نہ تو لیڈر ہیں اور نہ ہی کسی پارٹی کا ترجمان۔ محمد زبیر کی گرفتاری پر اپنا شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے موئترا نے ایک شعر بھی لکھا ہے۔ وہ شعر اس طرح ہے ،نفرتوں کی جنگ میں دیکھو تو کیا کیا کھو گیا، سبزیاں ہندو ہوئیں بکرا مسلماں ہو گیا‘‘۔دوسری طرف مجلس اتحاد المسلمین کے سربارہ اپم پی اسدالدین اویسی نے بھی محمد زبیر کی گرفتاری کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ زبیر کو بغیر کسی نوٹس کے نامعلوم ایف آئی آر میں گرفتار کیا گیا ہے۔

دہلی پولیس پر الزام عائد کرتے ہوئے اویسی نے کہا کہ دہلی پولیس مسلم کے خلاف قتل عام کا نعرہ لگانے والوں کے خلاف کوئی قدم نہیں اٹھاتی ہے، لیکن جرائم کی رپورٹ کرنے والے اور غلط جانکاریاں دینے والوں کا مقابلہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کرتی ہے۔واضح رہے کہ محمد زبیر فی الحال پولیس کی یک روزہ ریمانڈ پر ہیں۔ انھیں آج ایک بار پھر عدالت میں پیش کیا جا سکتا ہے۔ پولیس ان کی ریمانڈ میں اضافہ کرنے کی اپیل عدالت میں کر سکتی ہے۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button