ممبئی

راج ٹھاکرے نے مساجد کے سامنے ہنومان چالیساکامنصوبہ ملتوی کیا

ممبئی2مئی (ہندوستان اردو ٹائمز) مہاراشٹر نو نرمان سینا کے سربراہ راج ٹھاکرے نے ملک بھرمیں نفرت کوفروغ دیتے ہوئے3 مئی تک مساجد کے سامنے سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کا انتباہ دیا تھا۔ دوسری طرف اتوار کو انہوں نے اورنگ آباد کے جلسے میں کہا تھا کہ سب کو عید خوشی سے منانی چاہیے، لیکن وہ 4 مئی کو کسی کی نہیں سنیں گے۔ لیکن اب اودھوٹھاکرے کی وارننگ کے بعدراج ٹھاکرے کا بیان آیا ہے۔

اس میں انہوں نے کل مساجد کے سامنے ہنومان چالیساکا منصوبہ منسوخ کر دیا ہے۔راج ٹھاکرے نے کہا ہے کہ کل عید ہے۔ مسلم معاشرے کے اس تہوار کو خوشی سے منانا چاہیے۔ کل ایم این ایس کا کوئی کارکن ہنومان چالیسا نہیں پڑھے گا۔ اس کے ساتھ انہوں نے کہاہے کہ 4 مئی کو وہ آگے بتائیں گے کہ لاؤڈ اسپیکر پر ہنومان چالیساکے بعد کیا کرنا ہے۔ راج ٹھاکرے نے کہاہے کہ لاؤڈ اسپیکر کا مسئلہ مذہبی نہیں بلکہ سماجی ہے۔

اس معاملے میں ہمیں آگے کیا کرنا ہے، میں کل یعنی منگل کو ٹویٹ کر کے بتاؤں گا۔راج ٹھاکرے نے اتوار کو اورنگ آباد ریلی میں کہا کہ ہم نے مساجد سے لاؤڈ اسپیکر ہٹانے کے لیے 3 مئی تک کا الٹی میٹم دیا ہے۔ لیکن عید 3 مئی کو ہے۔ میں اس تہوار کو خراب نہیں کرنا چاہتاہوں۔ حکومت سے گزارش ہے کہ ہمارا مطالبہ پورا کرے ورنہ 4 مئی کے بعد ہم کسی کی نہیں سنیں گے۔ ایم این ایس سربراہ نے کہا ہے کہ اگر ہمارا مطالبہ پورا نہیں کیا گیا تو ہم دوہری طاقت سے ہنومان چالیساپڑھیں گے۔ اگر ہماری درخواست نہ سمجھی گئی تو ہم اسے اپنے طریقے سے نمٹائیں گے۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button