دیوبند

ذی الحجہ کا مہینہ گناہوں کے کفارے کا موسم ہے : مفتی ارشد فاروقی

دیوبند، 8؍ جولائی (رضوان سلمانی) فتویٰ آن موبائل سروس دیوبند کے چیئرمین مفتی محمد ارشد فاروقی نے جاری بیان میں کہا ہے کہ ذی الحجہ ہجری سال کا بارہواں آخری مہینہ ہے جو عالم اسلام کے لئے دل کش بہار کا مہینہ ہوتا ہے۔ اس مہینے کے پانچ دن اسلام کے پانچویں فریضہ اور رکن کی ادائیگی کے دن ہیں جن میں بندہ حاجی اللہ کا خاص قرب حاصل کرتاہے اور نومولود بچے کی طرح گناہوں سے پاک ہوجاتاہے اورگناہوں کے کفارے کایہ موسم صرف حاجیوں کے لیے خاص نہیں ہے بلکہ پوری دنیا میں آباد مسلمانوں کے لیے بھی خوش گوار ہے جس سے زندگی میں نکھار پیدا ہوتاہے دل میں اطمنان ہوتاہے اور ایمانی کیفیات میں اضافہ ہو تاہے ۔

انہوں نے کہا کہ ذی الحجہ کے پہلے عشرے کی فضیلت قرآن نے بیان کی قسم ہے فجر اوردس راتوں کی جمہور مفسرین نے دس راتوں کو ذی الحجہ کی دس راتیں بتا ئی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بخاری ومسلم کی روایت ہے کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اس عشرے میں جو نیک عمل انجام دیا جائے وہ اور دنوں میں انجام دینے کے مقابلے میں زیادہ بہتر ہے ۔ ان دنوں کی ہر عبادت نماز ،روزہ، صدقہ، حسن سلوک ورواداری ،خدمت خلق ،والدین کے حقوق کی ادائیگی، صلہ رحمی، انصاف کے قیام کی کوشش ،ظلم سے روکنے کی کاوش سب قابل صد ستائش ہیں اوراجر وثواب میں بیحد اضافہ ہوجاتا ہے۔

مفتی ارشد فار وقی نے کہا کہ ذی الحجہ کے پہلے عشرے کے آخری دن میں تو بندہ خدا نیکیوں سے مالا مال ہوسکتا ہے، دامن مراد بھر سکتا ہے اور بڑاسرمایہ پاسکتا ہے بس جوہرگراں مایہ قدر کی حصول یابی کے لیے تپش سوزش برداشت کرکے نویں ذی الحجہ کو روزہ رکھنا ہوگا ۔ رسولِ خدا صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا عرفہ کے دن روزے کے بارے میں مجھے اللہ سے امید ہے کہ ایک سال پچھلے ایک سال اگلے گناہ مٹادیںگے۔

نویں ذی الحجہ کے روزے کی فضیلت کس قدر عظمت کی حامل ہے، ایک روزہ اور دوسال کے گناہوں کی بخشش کااعلان رحمن کی رحمت برستی ہے، یہ ہے گناہوں کے کفارے کا موسم۔ انہو ںنے کہا کہ واضح ہو کہ جس ملک میں 9تاریخ ذی الحجہ کی ہوگی اسی دن روزہ رکھنا ہوگا، سعودی عرب میں تاریخ بدل جاتی ہے جیسے قربانی 10ذی الحجہ کو ہر ملک کی تاریخ کے اعتبار سے ہوتی ہے۔نویں ذی الحجہ کا روزہ رکھیے اور دولت بے بہا کمایئے۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button