دیوبند

باہر سے آنے والے خراب کررہے ہیں ضلع سہارنپور کے حالات : باہر سے آنے والے افراد کو سختی کے ساتھ ہوم کورنٹائن کرایا جائے : ضلع مجسٹریٹ

دیوبند، 29؍ جون (رضوان سلمانی) اب تک اپنی مستعدی سے بچتے آرہے سہارنپور کے حالات برابر خراب ہورہے ہیں ، پہلے تبلیغی جماعت کو خطرہ بتایا جارہا تھا لیکن اب ضلع کے رہنے والے بھی اپنی ذمہ داریوں کو درکنار کرکے ایسے گھوم رہے ہیں کہ مانو کرونا یہاں سے چلا گیا، اب تو دہلی ، نوئیڈا، غازی آباد اور دیگر اضلاع سے واپس آرہے افراد کرونا کو ساتھ لے کر آرہے ہیں لیکن ضلع کے رہنے والے افراد اپنی ذمہ داریوں کو سمجھنے کے لئے تیار نہیں ہیں ۔

ضلع میں تو بہوجن سماج پارٹی کے ممبر پارلیمنٹ اور بی جے پی خاتون لیڈر کو بھی کرونا وائرس نے اپنی زد میں لے لیا ہے ، جب کہ پولیس اہلکار اور عدالتوں میں کام کررہے ملازمین بھی اس مرض میں مبتلا ہورہے ہیں۔ ضلع سہارنپور میں اب تک 369مریض ہوچکے ہیں حالانکہ اب ضلع انتظامیہ کو سختی کرنی پڑے گی تاکہ لوگ باہر کا سفر نہ کریں ، گزشتہ کل بی جے پی کی خاتون لیڈر اور ان کے شوہر جو عدالت میں ملازم سمیت 7افراد میں کرونا کی تصدیق ہوئی ہے یہ سب افراد ایسے ہیں جو عوام کے برابر رابطے میں رہتے ہیں ، کلکٹریٹ میں تو کووڈ ہیلپ ڈیسک ملازم بھی کرونا مریض ہوگیا ہے۔

ضلع انتظامیہ اب سختی کے موڈ میں آگیا ہے، ہوسکتا ہے کہ دیگر اضلاع کی طرح اب سہارنپور میں بھی رات 9بجے سے ایکٹیو ہونے والا کرفیو 8بجے ہی شروع ہوجائے اور ساتھ ہی بغیر ماسک اور ڈسٹینسنگ کے بغیر گھوم رہے افراد کے خلاف لکھے جانے والے مقدمات کی تعدادمیں اضافہ کیا جائے۔ ضلع مجسٹریٹ نے بھی باہر سے آمد ورفت کرنے والے افراد کے لئے پیغام دیا ہے کہ جب تک بہت ضروری نہ ہو تو کوئی بھی افراد کرونا متأثرہ اضلاع میں نہ جائیں اور نہ وہاں سے آئیں۔ ضلع مجسٹریٹ نے پولیس اور محکمہ صحت سے صاف طور پر کہہ دیا ہے کہ باہر سے آنے والے افراد کو سختی کے ساتھ ہوم کورنٹائن کرایا جائے اور جو متعینہ میعاد میں باہر ملے تو اس کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے ۔

اسی طرح بھیڑ بھاڑ والی دوکانوں کو بند کروادیا جائے تاکہ سوشل ڈسٹینسنگ کے نظام کو برقرار رکھا جاسکے۔ اس سلسلے میں ضلع مجسٹریٹ اکھلیش سنگھ کا کہنا تھا کہ ضلع کے عوام سے برابر کہا جارہا ہے کہ ان لاک 1چل رہا ہے لیکن اس کا مطلب بالکل یہ نہیں ہے کہ وہ باہر آئیں اور جائیں کیو ںکہ ضلع میں اب جتنے بھی کرونا کے مریضوں کی تصدیق ہورہی ہے وہ سبھی دہلی ، نوئیڈا، غازی آباد، چنڈی گڑھ وغیرہ شہروں سے آنے والوں کو ہورہا ہے اور پھر ان کے رابطے میں آنے والوں کو یہ مرض پیدا ہورہا ہے اس لئے اگر ضروری نہ ہو تو کوئی بھی باہر نہ جائے اور نہ ہی ایسے اضلاع سے اپنے رشتے داروں کو گھر بلائیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close