دیوبند

شہریت ترمیمی قانون کو لیکر درج مقدموں میں کارروائی شروع!

دیوبند اور سہارنپور میں درج مقدمات میں نامعلوم افراد کی شناخت کررہی ہے پولیس

دیوبند ۔ 30؍دسمبر 2019 (ایس۔چودھری) شہریت ترمیمی قانون کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرنے والے افراد اب پولیس کی راڈار پر آگئے ہیں۔ 11دسمبر کو دیوبند اور 20دسمبر کو کوتوالی شہر سہارنپور میں قائم کئے گئے دو مقدمات میں پولیس نے آگے کی کارروائی شروع کردی، 1850نامعلوم افراد کی شناخت کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے جس میں 500چہروں کی شناخت کی جاچکی ہے ، ان سبھی 500افراد کے گھر پر نوٹس پہنچ گئے ہیں ، حالانکہ ان میں سے کسی بھی افراد کی گرفتاری نہیں کی جارہی ہے لیکن سبھی کے خلاف ثبوتوں کے ساتھ چارج شیٹ عدالت میں پیش کی جائے گی تاکہ عدالت ان کے بارے میں فیصلہ لے سکے۔ تفصیل کے مطابق شہریت ترمیمی قانون کو لے کر سہارنپور سمیت ملک بھر کے کئی حصوں میں احتجاجی مظاہرے ہوئے تھے ، کئی مقامات پر ہنگامہ آرائی بھی ہوئی جس میں پتھرائو، آگ زنی وغیرہ کی گئی لیکن سہارنپور ضلع ان سب سے بچ گیا تھا ، سہارنپور میں 11دسمبر کو سیکڑوں افراد نے دیوبند میں جی ٹی روڈ پر جام لگاکر احتجاجی مظاہرہ کیا تھا جس میں پولیس نے 250افراد کے خلاف مقدمہ قائم کیا تھا ، جب کہ 20؍ دسمبر کو سہارنپور کے گھنٹہ گھر پر اسی طرح کا مظاہر ہ کیا گیا تھا اور گھنٹوں تک جام لگایا گیا تھا ، اس معاملے میں پولیس نے دفعہ 144کی خلاف ورزی اور جام لگانے کی دفعات میں 1600نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ قائم کیا تھا ۔ اس سلسلے میں ایس ایس پی دنیش کمار پی نے بتایا کہ نامعلوم مظاہرین کی نشاندہی کرنے کے لئے مہم چلائی جارہی ہے ، اب تک 500مظاہرین کی شناخت ہوچکی ہے ، ان سبھی کے گھر نوٹس بھیج دیئے گئے ہیں، جلد ہی ان سبھی کے خلاف ثبوتوں کے ساتھ چارج شیٹ عدالت میں داخل کی جائے گی ۔ سی اے اے کے خلاف ماحول خراب کرنے کے ارادے سے بھی جو سڑک پر آئے اور پولیس کے کیمروں میں قید ہوگئے ان پر ہمیشہ نظر رہے گی ۔ اگر ضلع میں کچھ بھی ہوتا ہے تو سب سے پہلے نشاندہی کئے گئے افراد کو حراست میں لے کر پوچھ تاچھ کی جائے گی ، ان ہی سے ان کی بے گناہی کے ثبوت مانگے جائیں گے ۔ ایس ایس پی نے بتایا کہ اس مہم میں جو 18سال سے کم عمر کے مل رہے ہیں نوٹس ان کے اہل خانہ میں ذمہ دار کو دیئے جارہے ہیں ۔ احتجاج کے لئے انہیں قصوروار بناکر چارج شیٹ عدالت میں داخل کی جائے گی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close