دیوبند

دیوبند: جمعیۃ علماء کی جانب سے دی جانے والی گرفتاری کسی وجوہات کی بنا پر مؤخر

دیوبند، 26؍ دسمبر (رضوان سلمانی) سی اے اے کی مخالفت میں دیوبندسے جاری جمعیۃ علماء ہندکی گرفتاری تحریک کے تحت آج بھی لوگ اپنی اپنی گرفتاردینے کے لئے عیدگاہ میدان پر پہنچے لیکن کئی وجوہات کی بنا پر ان کی گرفتاری نہیں ہوسکی ہے اور اے ڈی ایم ایف بھی گرفتاری دینے والوں کا انتظار ہی کرتے رہے، جس کے سبب فی الحال کچھ روز کے لئے جمعیۃ علماء ہند نے اس تحریک کو مؤخر کردیاہے۔ سی اے اے کے خلاف جاری احتجاجی مظاہروں کے سبب دیوبند میں زبردست پولیس فورس تعینا ت ہے اتنا ہی نہیںبلکہ ان مظاہروںکو لیکر ضلع انتظامیہ بھی کافی سخت دکھائی دے رہی ہے ،جس کے سبب ایک مرتبہ پھرضلع میں انٹر نیٹ سہولیات کو جمعہ کی شام تک بند کردیاگیا۔ گزشتہ اتوار کے روز سے دیوبند کے عیدگاہ میدان سے شہریت ترمیمی قانون کے خلاف شروع ہوئی جمعیۃ علماء ہند کی گرفتاری تحریک میں آج طے شدہ پروگرام کے باوجود کسی کی بھی گرفتاری نہیں ہوسکی ہے۔ حالانکہ اس سے قبل اتوار اور منگل کے روز 313؍ افراد اپنی گرفتاری دے چکے ہیں جنہیں انتظامیہ کے ذریعہ فوراً ہی رہا بھی کردیا گیا تھا،اسی کے تحت آج جمعیۃ علما ء سہارنپور کے تحت سیکڑوں لوگوں کی گرفتاری ہونی تھی مگر طے شدہ پروگرام کے باوجود انکی گرفتاری نہیں ہوسکی ہے۔ جمعیۃ سے جڑے ذرائع کاکہناہے کہ شدید سرد موسم اور آئندہ جمعہ ہونے کے وجہ سے آج پروگرام کے باوجود گرفتاریاںنہیں ہوسکی ہیں، ان کہناتھا کہ وقت پر متعینہ تعداد میں تمام افراد موقع پر نہیں پہنچے تھے جس کے سبب جمعیۃ کارکنان نے گرفتاری کے پروگرام کوفی الوقت ترک کرتے ہوئے آئندہ کچھ روز کے لئے گرفتاری مہم کو مؤرخ کردیاہے اور جمعیۃ اگلے کسی اہم پروگرام کی تیاری میں ہے،جمعہ کے روز جمعیۃ کے پروگرام پر سبھی کی نظریں لگی ہیں، حالانکہ اس سلسلہ میں جمعیۃ علماء ہند کے عہدیداران کی طرف سے کوئی تصدیق نہیں نہیں کی گئی ہے۔آج خانقاہ پولیس چوکی پر اے ڈی ایم ایف ونود کمار گرفتاری دینے والوں کا انتظار کرتے رہے لیکن شام تک کسی نے بھی اپنی گرفتاری نہیں دی اور عیدگاہ میدان میں ترنگا جھنڈا و جمعیۃ کا جھنڈ لہراتا رہا۔ بتایاگیاہے کہ جمعیۃ کی طرف 250؍ افراد کے نام گرفتاری کے لئے دیئے گئے تھے باوجود اس کے گرفتاری نہیں دی جاسکی ہے۔ واضح رہے کہ شہریت ترمیمی قانون کے خلاف جاری احتجاجی مظاہروں کے سبب پولیس فورس نے دیوبند کو گزشتہ دو ہفتے سے چھاؤنی تبدیل کر رکھاہے۔ اس کے باوجود دیوبند میں مسلسل احتجاجی مظاہروں کی آواز بلند ہورہی ہے ۔ ڈی ایم سہارنپور نے آج ایک مرتبہ پھر ہدایت جاری کرکے دو دن کے لئے یہاں انٹر نیٹ سہولیات کو بندکردیاہے ۔ ڈی ایم آلو ک کمار کاکہناہے کہ کسی کو بھی پروگرام کی اجازت نہیں دی جارہی ہے ،لیکن اسکے باوجود لوگ پروگرام منعقد کررہے ہیں ان کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے، کسی بھی طرح کے تشدد کے لئے پروگرام کنوینر پر راست کارروائی عمل میں لائی جائیگی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close