دیوبند

دیوبند : شہر سے لے کر دیہی علاقے تک سڑکیں سنسان ، کھانے کے سامان کی گھرگھر سپلائی کا نظام ابھی بھی درست نہیں

پولیس اہلکار بلاوجہ دوکانداروں کو کررہے ہیں پریشان

دیوبند، 31مارچ (رضوان سلمانی) کورونا وائرس سے جنگ کے چلتے ہوئے لاک ڈائون سے جہاں شہر سے لے کر دیہی علاقوں تک سنّٹا پسرا ہوا ہے وہیں ضروری سامان کی سپلائی گھروں تک پہنچانے کی انتظامیہ کی اسکیم آج بھی پوری طرح عمل میں نہیں آپائی ہے جس کی وجہ سے لاک ڈائون پر عمل کرنے والے افراد کو پریشانیوں کا سامنا کرناپڑرہاہے۔ حکومت وانتظامیہ کی ہدایت پر مذہبی شہر دیوبندمیں لاک ڈائو ن پر پوری طرح عمل کیا جارہاہے کچھ افراد کو چھوڑ کر سبھی افراد اپنی ذمہ داری سمجھتے ہوئے گھروں سے باہر نہیں نکل رہے ہیں جس کی وجہ سے شہر کی گلیاں اور بازار پوری طرح سنسان ہیں۔ اس نظام کو بنائے رکھنے کے لئے شہر کے چوک چوراہوں پر پولیس فورس تعینات ہے اور بلاوجہ گھرسے باہر گھوم رہے افراد پر سختی دکھاتے ہوئے پولیس انہیں واپس گھروں میں بھیج رہی ہے جبکہ انتظامیہ کی جانب سے گھر گھر کھانے کا سامان پہنچانے کانظام ابھی بھی درست نہیں ہوپایا ہے، شہر کے کئی وارڈ میں منتخب دوکاندار گھروں تک سامان کی سپلائی نہیں کرپارہے ہیں ، لوگوں کا الزام ہے کہ نگر پالیکا ممبران نے اپنے قریبی دوکانداروں کوہی نگر پالیکا کی جانب سے پاس جاری کرائے ہیں، ان میں بڑی تعداد میں ایسی دوکانیں منتخب کی گئی ہیں جو بہت چھوٹی ہیں اور ان کے پاس کھانے پینے کا سامان ہی مہیا نہیں ہے جس سے لوگوں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑرہاہے۔ وہیں مختلف وارڈ میں منتخب دوکان مالکان کاکہناہے کہ پولیس اہلکاروں کا رویہ ان کے کام میں خلل پیدا کررہاہے ، گشت کررہے پولیس اہلکار بلاوجہ ان کے ساتھ گالی گلوچ کررہے ہیں۔ ہوم ڈیلوری کے وقت بھی انہیں پریشان کیا جارہاہے اگر ایسا ہی ہوتا رہا تو وہ دوکانیں بند کرکے اپنے گھروں کو چلے جائیں گے جبکہ ضلع مجسٹریٹ اکھلیش سنگھ نے گزشتہ رات یہ اعلان کیا تھا کہ صبح 6بجے سے 9بجے تک سبھی کھانے کے سامان کی دوکانیں کھلیں گی اور جس کے پاس دوکان کا لائسنس ہے وہ صبح 6بجے سے شام 6بجے تک کھولی جاسکے گیں۔ اس کے باوجود بھی پولیس صبح سے ہی کریانہ کی دوکانیں بند کرانے لگتی ہے اور ان کے ساتھ نازیبا سلوک کیا جاتاہے جس وجہ سے انہیں پریشانی اٹھانی پڑرہی ہے۔واضح ہو کہ گزشتہ کل ایس ڈی ایم دیویندر کمار پانڈے نے نگر پالیکا میٹنگ ھال میں شہر کے تاجران کے ساتھ میٹنگ کرتے ہوئے گھروں تک کھانے کے سامان کی سپلائی صحیح طریقہ پر کرنے کی گفت وشنید کی تھی ، اس دوران تاجران نے ایس ڈی ایم کے سامنے مختلف مشورے بھی پیش کئے تھے مگر ابھی تک گھر گھر تک سامان پہنچانے کا نظام درست نہیں ہوپارہاہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close