دیوبند

موجودہ حالات میں بے حد احتیاط اور دیکھ بھال حفاظتی تدابیر کو بروائے کار لانے کی ضرورت ہے: ڈاکٹرانورسعید

دیوبند،28مارچ (رضوان سلمانی) موجودہ حالات میں بے حد احتیاط اور دیکھ بھال حفاظتی تدابیر کو بروائے کار لانے کی ضرورت ہے ڈاکٹر انور سعید کورونا سے عوام کو محفوظ رکھنے کے لئے حکومت کی جانب سے اعلان کردہ 21روز لاک ڈائون کو کامیاب بنانے کے لئے پولیس وانتظامیہ کے علاوہ سپاہی، سماجی اور مذہبی شخصیات کے ساتھ ساتھ ڈاکٹر، حکیم اور ویدھ نیز وکلاء وغیرہ مسلسل جدوجہد کررہے ہیں اور دن رات عوام سے اپیل کررہے ہیں کے لاک ڈائون پر مکمل طورسے عمل کریں اور جواحتیاطی تدابیر بتائی جارہی ہیں ان پر سختی سے عمل پیرا رہیں۔ جامعہ طبیہ دیوبند کے سکریٹری ڈاکٹر انور سعید نے کورونا وائرس سے بچائو اس کو پھیلنے سے روکنے اور احتیاطی تدابیر کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ہرشخص اس بات سے واقف ہے کہ کرونا وائرس نے پوری دنیا میں کس قدر جانی تباہی مچارکھی ہے، اب تک پوری دنیا میں اس و ائرس سے متأثر لاکھوں افراد لقمۂ اجل بن چکے ہیں۔ہندوستا ن میں بھی یہ مہلک وباء دن بہ دن زور پکڑتی جارہی ہے، انہوں نے کہا کہ 23مارچ سے اس بیماری کا خطرناک مرحلہ شروع ہوچکا ہے اور 27مارچ سے اس کی شدت میں مزید اضافہ ہوگا اس لئے ان ایام میں بے حد احتیاط اور دیکھ بھال کے ساتھ تمام حفاظتی تدابیر کو بروکار لانے کی ضرورت ہے، ڈاکٹر انورسعید نے کہا کہ زیادہ عمر والے افراد اور کم قوت مدافعت رکھنے والے اشخاص کے لئے یہ انفیکشن جان لیوا ثابت ہوسکتاہے ،انہوں نے کہا لیکن اس کا یہ مطلب ہرگز نہیں نوجوان یہ بچے اس کا شکار نہیں ہوسکتے ، اس مہلک وباء کا خطرہ سب کے لئے یکسا ہے، انہوں نے کہا مشاہد ے سے یہ ثابت ہورہاہے کہ یہ کورونا وائرس خواتین کے مقابلے مردوں کو زیادہ متأثر کررہاہے،اس لئے اموات کی شرح مردوں میں زیادہ ہے، ڈاکٹر انور سعید نے کہا کہ تمباکو نوشی بھی اس کی وجہ سے ہوسکتی ہے کیونکہ تمباکو نوشی کرنے والوں میں خواتین کے مقابلے مردوں کا فیصد گئی گنا ہے، اس لئے مردوں کے پھیپڑے بہت جلد متأثر ہوجاتے ہیں، اعدادوشمار کے مطابق کورونا وائرس کے سبب ہلاک ہونے والے مردوں میں 26فیصد افراد تمباکو نوشی کے عادی تھے، ڈاکٹر انور سعید نے اس سلسلہ میں ہونے والی حالیہ تحقیق کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ تمباکو نوشی وائرس سے متأثر ہونے کا سبب بھی ثابت ہوسکتی ہے کیونکہ تمباکو نوشی کے عادی افراد اپنے ہونٹوں کو زیادہ چھوتے ہیں ایسے میں آلودہ سگریٹ آپس میں شیئر کرنے سے بھی انفیکٹڈ ہونے کے زیادہ امکانات ہیں، اس کے علاوہ مردوں میں خواتین کے مقابلہ صفائی کا رجحان کم ہوتاہے، عام طورپر صابن وغیرہ کا استعمال کم کرتے ہیںاور ساتھ ساتھ طبی مشہوروں کو نظر انداز کردیتے ہیں نتیجتاً وہ آسانی کے ساتھ امراض کے ہدف بن جاتے ہیں، ڈاکٹر انور سعید نے کورونا سے بچائو کی تدابیر کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ صابن اور گرم پانی کا استعمال کورونا سے بچائو کے لئے زیادہ مفید ہے، انہوں نے کہا کہ گرم پانی سے کم از کم 20سیکنڈ تک ہاتھ دھونے چاہئیں کیونکہ پانی اور صابن سے کورونا وائرس کا خاتمہ ہوجاتا ہے، اس کے ساتھ ہی جسم کے مدافعتی نظام کو درست رکھنے کے لئے وٹامن اے وٹامن سی کو بڑھانے والی اشیاء کا زیادہ استعمال کریں، جیسے گاجر ، لیمو، سنترہ، مالٹا، کیوی، اسٹرابیری، شملہ مرچ وغیرہ کا استعمال مفید ثابت ہوتاہے، مدافعتی نظام کے درستگی کے لئے دودھ ،انڈے، گوشت، پروٹین و الی چیزوں کو ترجیح دیں،دہی اور پنیر کے استعمال سے بھی اچھے نتائج حاصل ہوتے ہیں، ڈاکٹرانورسعید نے بتایاکہ دیگر متأثرہ ممالک کے مقابلہ ہمارے ملک میں صرف 629معاملے سامنے آئے ہیں اور 12افراد فوت ہوئے ہیں، لاک ڈائون اور ہدایات پر سختی سے عمل کرکے ہم مذکورہ تعداد کو بڑھنے سے روک سکتے ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close