دیوبند

حکومت کو چلانے والے لوگ غرور میں ہیں اور انہیں ملک کی کوئی فکر نہیں:شبینہ لیاقت

عیدگاہ کے میدان میں سی اے اے کے خلاف خواتین کا چل رہادھرنا 21ویں روز بھی جاری

دیوبند،16فروری (رضوان سلمانی) متحدہ خواتین کمیٹی کے زیر اہتمام شہریت ترمیمی قانون کے خلاف چل رہادھرنا مظاہرہ 21ویں روز بھی جاری رہا،بڑی تعداد میں لوگ ترنگے ہاتھوں میں لے کر احتجاجی مظاہرہ کے مقام پر پہنچے اور ہندوستان زندہ باد کے نعرہ لگائے۔ مقررین نے حکومت کو سب کا ساتھ سب وِکاس اور سب کا یقین کے نعرے کی یاد دلاتے ہوئے عوام کے مفاد میں سی اے اے کو فوراً واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ عیدگاہ میدان میں گزشتہ 21روز سے چل رہے خواتین کے احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے رحاف عثمان نے کے بی جے پی مرکز میں دوسری مرتبہ حکومت کے قائم کرنے کے ساتھ اپنے نعرے سب کا ساتھ سب کا وِکاس میں سب کا یقین لفظ بھی جوڑا تھا جس خو ب تشہیر بھی کی گئی تھی، حکومت کے اس نعرے سے ملک می رہنے والے سبھی لوگوں کو امید پیدا ہوگئی تھی کہ شاید اب حکومت مذہب کی سیاست سے اُوپر اٹھ کر ترقی کی سیاست کرے گی لیکن حکومت کے دوسرے دعووں کے طرح یہ بھی صرف جملہ ہی ثابت ہوا ۔ زیبا اور عرشی نے کہا کہ ملک کی لگاتار معیشیت کمزور ہوتی جارہی ہے ، بے روزگاری میں اضافہ ہے، مہنگائی کے سبب دو وقت کی روٹی تک کمانا مشکل ہوتاجارہاہے، یہ ملک غریبوں اور کسانوں کا ملک ہے، یہاں پر تعلیم روزگار اور دیگر چیزوں کی ضرورت ہے، ناکہ سی اے اے اور این آرسی کی ،حکومت اس بات کو سمجھنی چاہئے، حسین اور شبینہ لیاقت نے کہا کہ ملک بھر میں سی اے اے کی مخالفت میں اضافہ ہوتاجارہاہے، اور سرکار ہٹ دھرمی پر اَڑی ہوئی ہے، جس سے ثابت ہوتا ہے کہ حکومت کو چلانے والے لوگ غرور میں ہیں اور انہیں ملک کی کوئی فکر نہیں ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت ملک کی عوام کچھ لوگوں کو اپنی سرکار کے طورپر اس لئے منتخب کرتی ہے تاکہ ان کی صحیح نمائندگی ہوسکے ، لیکن افسوس عوام کی منتخب حکومت ہی عوام کی نمائندگی نہیں کرپارہی ہے۔ احتجاج میں بڑی تعداد میں خواتین شریک ہورہی ہیں اتنا ہی نہیں بلکہ دیہی مواضعات سے بھی خواتین اس ’ستیہ گرہ‘کاحصہ بن رہی ہیں۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close