بہار و سیمانچل

نوادہ ضلع کے مختلف جگہوں پر غیر معینہ مدت دھرنا احتجاج حسب معمول جاری

نوادہ ( محمد سلطان اختر ) نوادہ ضلع کے تحت بہت سی جگہوں پر دھرنا چل رہا ہے، جس میں پہلا دھرنا کی جگہ بنڈلہ باغ جو نوادہ شہر میں آتا ہے، اس کا آج 33 واں دن ہے، یہ دھرنا 8رکنی ٹیم کے تحت چل رہا ہے، اس ٹیم کے سربراہ ندیم حیات ہیں، دوسرا دھرنا دھمول کا صمید باغ ہے، صمید باغ کا آج 23 واں دن ہے، صمید باغ کے سربراہ قمر الباری دھمولوی ہیں، اور تیسرا دھرنا گلزار باغ کے پکری برانواں میں چل رہا ہے، گلزار باغ کا آج21 واں دن ہے، گلزار باغ کا دھرنا انقلابی فکری گروپ کے تحت چل رہا ہے، اور باشندگان پکری برانواں کی پوری حمایت ملی ہے، ان تینوں جگہوں پر دھرنا ہیں جو پرجوش طریقے سے چل رہا ہے، ان سبھی دھرنوں پر کویتا کرشنن سی پی آئی مالے کے بیرو چیف،اور سید مسیح الدین سماجی خدمت گزار نواده،کرشن دیو کامریڈ رہنماء، اور نجیب احمد عرف لڈو جو راجد اقلیتی سیل کے نائب صدر ہیں، سبھوں کی حاضری ہوئی سبھوں نے باری باری اپنی باتیں رکھی، سبھوں نے این پی آر کے سلسلے میں تفصیلی گفتگو کی، اور کہا کہ این پی آر میں اپنے اپنے کاغذات نہیں دکھائیں، اور گھر والوں کے نام بھی نہیں بتائیں،اگر بتا دیا تو سمجھ لیجئے آپ کا نام این آر سی میں نام آ گیا،این پی آر میں پہچان دینے کا مطلب مشکوک ہونا،آپ کے نام کے سامنے صرف ڈی لکھ دیا جائے گا،اور آپ مشکوک ہو جائیں گے، ڈاؤٹفل کے تحت آپ سے کاغذات مانگے جائیں گے، پھر این آر سی کے ذریعے ٹینشن کیمپ آپ پر لازمی ہو جائے گا، اگر آپ درست کاغذات دکھا بھی دیتے ہیں تو آپ کا پڑوسی سے نا اتفاقی ہونے کی وجہ کر پڑوسی یا گاؤں کے کوئی بھی لوگ شکایت کر دیتے ہیں، تو اپ ڈاوٹفل بن جائیں گے، اسی لیے یہ خطرناک قانون ہے،اسے سیاہ قانون سے تعبیر کیا گیا ہے، اس لئے این پی آر کے سلسلے میں کوئی بھی شخص کوئی کاغذات سرکاری ملازم کو نہ دکھائیں، نہ کوئی جانکاری دیں، سرکاری ملازم اگر آپ کے پاس آئے تو اسے روح افزاء پلاکر واپس کردیں، لیکن کاغذات نہیں دکھائین، یہ سبھی باتیں کویتا کرشنن مالے رہنماء نے اپنے تقریر میں کہا انہوں نے پوری اجلاس میں کہا کہ این پی آر کے سلسلے میں نتیش کمار جو موتی چور کا لڈو منہ میں لے کر خاموش بیٹھے ہیں، ان کو اس لڈو کو منہ سے نکالنا پڑے گا، نہیں تو ان کی سیاست ختم ہوجائے گی، اس سلسلے میں کہا وہ سب باتوں سے آگاہ ہونے کے باوجود بہار کی عوام کو دھوکہ دینا چاہتے ہیں،انہوں نے کہا کہ نتیش کماربولے تھے، این پی آر میں ترمیم کریں گے، اور پرانے این پی آر کے ذریعے ہی ہم جنگنّا کرائیں گے، لیکن جب بی جے پی کے امیت شاہ نے نہیں مانا تو چُپ چاپ بہار کے سبھی اضلاع کے ضلع مجسٹریٹ کو لیٹر بھیج کر ایک اپریل سے این پی آر کا کام شروع کرنے کی ہدایت کرتے ہیں، جو بہت ہی افسوس کی بات ہے، اس لئے بہار کی عوام سے کویتا کرشنن مالے رہنماء پھِر سے التماس کرتی ہیں کہ کسی حال میں این پی آر ہونے نہیں دیں،کوئی بھی آدمی کسی بھی سرکاری ملازم آئے تو ہر حال میں کاغذ نہیں دکھائیں، کسی بھی چیز کی کسی کو کوئی جانکاری نہیں دیں، اس کو ہر حال میں یاد رکھیں، اس موقع پر بہت سے گاؤں محلے سے آئے ہوئے لوگ دھرنا پر ہزاروں ہزارکی تعداد میں خواتین، مرد، بچے تینوں جگہوں کے دھرنا پر موجود تھے،

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close