دیوبند

سہارنپور کے ممبر پارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے زرعی بلوں کی واپسی کو لے کر پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس میں مظاہرہ کیا

دیوبند، 19؍ جولائی (رضوان سلمانی) سہارنپور کے ممبر پارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے زرعی بلوں کی واپسی کو لے کر پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس میں مظاہرہ کیا اور وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے قانون واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ تفصیل کے مطابق سہارنپور کے ممبر پارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس کے پہلے روز حکومت کی پالیسیوں کے خلاف مظاہرہ کیا ، پارلیمنٹ کی کارروائی شروع ہوتے ہی جیسے ہی وزیر اعظم نریندر مودی نے نئے مرکزی وزرا ء کا تعارف کرانا شروع کیا ، اسی وقت ممبر پارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے کسانوں کی حمایت میں تینوں زرعی قوانین کو واپس لینے کے لئے پوسٹر لہراکر اپنی مخالفت درج کرائی ۔ حاجی فضل الرحمن نے کہا کہ کسان پورے ملک کا پیٹ بھرتے ہیں ، آج انہیں ملک کے عوام کی ضرورت ہے۔ مگر حکومت ان کی طرف کوئی توجہ نہیں دے رہی ہے، کسانوں کی اس تحریک میں پورا ملک ان کے ساتھ کھڑا ہے ۔ بی جے پی اور کچھ صنعت کار ہی کسانوں کی اس تحریک کی مخالفت کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی مرکزی حکومت کارپوریٹ کو فائدہ پہنچانے کا کام کررہی ہے ، یہی وجہ ہے کہ مرکزی حکومت کو دھوپ اور آندھی طوفان ، گرمی میں سڑکوں پر پرامن طریقے پر زرعی قوانین کے خلاف چلارہے تحریک کسانوں کا درد نظر نہیں آرہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کسان گزشتہ 9ماہ سے اپنے حقوق کی لڑائی کے لئے سڑکوں پر بیٹھا ہے مگر حکومت ان کی طرف کوئی توجہ نہیں دے رہی ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم ہند سے مطالبہ کیا کہ تینوں زرعی قوانین کو فوراً واپس لیا جائے ۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close