دیوبند

عیدالاضحی کے موقع پر حکومت اور انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ گائڈ لائن کے مطابق ہی مساجد یا عیدگاہ میں نماز ادا کی جائے:مولانا محمد سفیان قاسمی

دیوبند، 19؍ جولائی (رضوان سلمانی) عیدگاہ وقف کمیٹی دیوبند کے صدر مولانا محمد سفیان قاسمی اور سکریٹری محمد انس صدیقی نے عیدالاضحی کے سلسلہ میں ایک مشترکہ بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ عیدالاضحی کے موقع پر حکومت اور انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ گائڈ لائن کے مطابق ہی مساجد یا عیدگاہ میں سوشل ڈسٹینسنگ اور فیس ماسک کے ساتھ 50افراد نماز عیدالاضحی ادا کریں ۔ مولانا محمد سفیان قاسمی نے عیدالاضحی سے متعلق حکومت کی جانب سے جاری گائڈ لائن پر پوری طرح عمل کرنے اور کورونا کی مہلک وبا کے باعث مکمل احتیاط برتنے کی اپیل کی۔

عیدالاضحی کے مسائل پر روشنی ڈالتے ہوئے مولانا موصوف نے کہا کہ ہر صاحب حیثیت پر قربانی کرنا واجب ہے۔ انہوں نے کہا کہ عیدالاضحی کے تین دنوں 10 ذی الحجہ تا 12ذی الحجہ میں قربانی کرنا اللہ تعالیٰ کی پسندیدہ عبادت اور سنت ابراہیمی پر عمل کرنا ہے جس کا بدل کوئی دوسرا عمل نہیں ہوسکتا۔ انہوں نے کہا کہ قربانی اور دیگر اعمال صالحہ کے ذریعہ سے اللہ تعالیٰ کی قربت حاصل ہوتی ہے ۔ مولانا موصوف نے فرمایا کہ حضرت ابراہیم علیہ السلام نے بارگاہ الٰہی میں تقرب حاصل کرنے کے لئے اپنے لخت جگر حضرت اسماعیل علیہ السلام کی قربانی پیش کی تھی ، یہ ادا اللہ تعالیٰ کو اس قدر پسند آئی کہ رہتی دنیا تک اس کو برقرار رکھنے اور تقرب کے حصول کا بہترین ذریعہ قرار دیدیا۔ مولانا محمد سفیان قاسمی نے کہا کہ جو لوگ ہر سال اپنی واجب قربانی کے ساتھ نفلی قربانیاں کراتے ہیں وہ موجودہ کووڈ 19وبا کے مدنظر نفلی قربانی کی رقومات کو راہِ خدا میں صدقہ کردیں جس کا بہترین مصرف مدارس اسلامیہ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ نماز عیدالاضحی کے بعد کورونا کی مہلک وبا کے خاتمہ اور پوری دنیا میں امن وامان کے قائم ہونے اور اپنے ملک کی فلاح وبہبود ، خوشحالی ، تعمیر وترقی، ملک کی سربلندی اور فقر وفاقہ کے خاتمہ کے لئے دعائیں کی جائیں۔

عیدگاہ وقف کمیٹی کے سکریٹری مولوی محمد انس صدیقی نے کہا کہ قربانی ایک اہم عبادت اور شعائر اسلام میں سے ہے اور ہر صاحب نصاب عاقل اور بالغ مسلمان پر قربانی واجب ہے۔ انہوں نے کہا کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے قربانی کے سلسلہ میں جو تاکید فرمائی ہے اس کا تذکرہ حدیث میں اس طرح ہے کہ جو شخص صاحب حیثیت ہونے کے باوجود قربانی نہ کرے وہ ہماری عیدگاہ کے قریب بھی نہ آئے۔ اس لئے ہر صاحب نصاب پر قربانی واجب ہے جس کا بہترین طریقہ سے اہتمام کرنا چاہئے۔ مولوی محمد انس صدیقی نے کہا کہ صرف ان ہی جانوروں کی قربانی کی جائے جن پر کوئی قانونی پابندی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ 19کے سبب قربانی کی جگہ کو سینی ٹائز کرکے ماسک اور دستانے لگاکر قربانی کے عمل کو پورا کریں اور صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھیں۔ سڑک کے کنارے یا کھلے مقام پر قربانی کرنے سے قطعاً گریز کریں۔ قربانی کرتے وقت فوٹو یا ویڈیو نہ بنائی جائے اور نہ ہی سوشل میڈیا پر قربانی کے مناظر اپلوڈ کئے جائیں۔ مولوی محمد انس صدیقی نے کہا کہ جانوروں کی آلائش اور فضلات کو باہر سڑکوں یا عوامی مقامات پر نہ پھینکیں بلکہ میونسپل بورڈ کی جانب سے تعینات ریڑھوں اور ٹرالی کے ذریعہ شہر سے باہر بھیجنے کا نظم بنائیں اور اپنے ارد گرد چونے کا چھڑکائو اور فنائل وغیرہ سے صاف کرنے کا ضروری اہتمام کریں۔ انہوں نے کہا کہ قربانی کے خون کو نالیوں میں بھی نہ بہنے دیں کیوں کہ یہ ناپسندیدہ عمل ہے۔ انہوں نے کہا کہ یوم عرفہ یعنی 9ذی الحجہ کی صبح فجر کی نماز سے 13ذی الحجہ کے دن عصر کی نماز تک ہر نماز کے بعد بہ آواز بلند بلند تکبیر وتشریق پڑھنے کا اہتمام کریں ۔ تکبیر وتشریق مرد اور خواتین دونوں پر واجب ہے، البتہ خواتین آہستہ آواز میں پڑھیں۔


ہندوستان اردو ٹائمز پر دیوبند کی خبروں سے باخبر رہنے کے لیئے اس لنک پر کلک

 کریں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close