دیوبند

دیوبند: پردھانی کے الیکشن کی رنجش میں ہوئے خونی تصادم میں فروز کی موت ،پولیس نے کیا مقدمہ درج

دیوبند، 22؍ جون (رضوان سلمانی) دیوبند تحصیل کے تحت آنے والے گائوں انبہٹہ شیخاں میں پردھانی کے الیکشن کی رنجش کی وجہ سے نوجوانوںمیں ہونے والا بحث و مباحثہ دیکھتے ہی دیکھتے خونریز لڑائی میں تبدیل ہو گیا ۔ اس دوران ایک نوجوان کو چاقؤوں سے حملہ کرکے شدید طور پر زخمی کردیا ۔ زخمی نوجوان کی علاج کے دوران سہارنپور کے ایک پرائیویٹ اسپتال میں موت واقع ہو گئی ۔ متاثرہ خاندان نے ملزمان کے خلاف پولیس سے کارروائی کئے جانے کا مطالبہ کیا ۔ پولیس نے ایک شخص اور اس کے بیٹے سمیت پانچ افراد کے خلاف معاملہ درج کرکے فوت ہوجانے والے نوجوان کی لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے بھیج دیا ۔

تفصیل کے مطابق دیوبند کے قریبی گائوں انبہٹہ شیخاں کے باشندہ شہید کے بیٹے 28؍سالہ فروز اور اجمل کے درمیان حال ہی میں ہونے والے تین سطحی گرام پنچایت الیکشن کو لیکر رنجش چل رہی تھی اسی رنجش کے سبب دونوں فریقوں میں پہلے بھی کافی بحث و مباحثہ ہو چکا تھا ۔ گذشتہ دیر شام فروز دیوبند سے اپنے گائوں واپس جا رہا تھا اسی دوران گائوں پہنچتے ہی ملزمان نے اسے گھیر لیا اور چاقو چھری سے حملہ کرکے اسکو شدید طورپر زخمی کر دیا ۔ اس حملہ میں فوت ہوجانے والے فروز کے چچا زاد بھائی نوشاد نے بتایا کہ جب فروز دیوبند سے گائوں پہنچا تو گائوں کے ہی اعظم اور اس کے بیٹے اجمل حسن ،شاہ رخ ،پرویز اور مکرم نے اسے انتخابی رنجش کے سبب گھیر لیا اور اس کے ساتھ مار پیٹ کرنے لگے لیکن جب فروز نے ان سے چھٹ کر بھاگنا چاہا تو ملزمان نے اسے ڈاکٹر بنگالی کی کلینک کے سامنے پکڑ لیا اور اجمل نے جان سے مارنے کی نیت سے ا س پر چاقو سے حملہ کر دیا جس کے باعث فروز شدید طور پر زخمی ہو گیا ۔ شور و غل کی آوازیں سن کر اور لوگوں کو اپنی طرف آتا دیکھ کر ملزمان موقع سے فرار ہو گئے ۔ نوشاد نے بتایا کہ شدید زخمی اور تشویش ناک حالت میں فروز کو علاج کیلئے دیوبند کے سرکاری اسپتال لایا گیا لیکن ڈاکٹروں نے اس کی تشویش ناک حالت کو دیکھتے ہوئے ابتدائی میڈیکل ایڈ دینے کے بعد ہائر سینٹر ریفر کر دیا ۔ جس کے بعد زخمی فروز کو علاج کیلئے سہارنپور کے جگدمبا اسپتال میں داخل کرایا گیا جہاں علاج کے دوران اس کی موت واقع ہوگئی ۔ متاثرہ خاندان نے پولیس سے ملزمان کے خلاف کارروائی کرنے اور فوت ہوجانے والے نوجوان کا پوسٹ مارٹم کرائے جانے کا مطالبہ کیا ۔ دیوبند کوتوالی کے انچارج اشوک سولنکی نے بتایا کہ پورا واقعہ ان کے علم میں ہے ،ملزمان کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرکے فروز کی لاش کا پوسٹ مارٹم کرائے جانے کیلئے پولیس ٹیم کو روانہ کر دیاگیا ہے ۔ پوسٹ مارٹم کے بعد شام کے وقت فروز کی لاش کو گائوں لایا گیا ۔ بعد ازاں گائوں کے ہی قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا ۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close