دیوبند

دیوبند، گائوں کی باشندوں کی سہولت کے لئے تعمیر کیا گیا سرکاری اسپتال بدحالی کا شکار

دیوبند، 15؍ جون (رضوان سلمانی) محکمہ صحت کے افسران سی ایچ سی کا دورہ کرکے ڈاکٹروں کو ضروری ہدایات تو دیتے رہتے ہیں لیکن گائوں دیہات میں گائوں کے باشندوں کی سہولت کے لئے تعمیر کئے گئے پی ایچ سی میں شاید سی ایم او سمیت کوئی آفیسر جھانک کر بھی نہیں دیکھتا ہے ۔ دیوبند بلاک کے گائوں پھلاس اکبر پور کی پی ایچ سی گزشتہ کافی وقت سے نظر اندازی کا شکار ہورہی ہے ۔ تفصیل کے مطابق دیوبند بلاک کے کالی پار علاقہ کے گائوں پھلاس اکبرپور میں حکومت کی جانب سے لاکھوں روپے خرچ کرکے آس پاس کے علاقوں کے لوگوں کے علاج کی سہولت کے لئے ایک پی ایچ سی کی تعمیر کرائی گئی تھی ۔ عالم یہ ہے کہ مذکورہ پی ایچ سی میں شاید ہی کبھی ڈاکٹر نہ بیٹھ کر وہاں کے باشندوںکا علاج کیا ہو یا کسی ڈاکٹر نے وہاں پہنچ کر وہاں دیکھ بھال کی ہو۔ عالم یہ ہے کہ محکمہ صحت کی نظروں سے دور مذکورہ پی ایچ سی میں شرپسند عناصر کا بول بالا ہے ، اتنا ہی نہیں کوڑے کباڑ سے بھری پی ایچ سی میں زبردست توڑ پھوڑ کی ہوئی ہے ۔ آج گائوں کے باشندوں کے بلانے پر پھلاس اکبرپور پہنچی سابق اسمبلی رکن ششی بالا پنڈیر نے پی ایچ سی کی حالت دیکھی ۔ اس سلسلے میں ششی بالا پنڈیر نے بتایا کہ گندگی سے بھری پی ایچ سی میں شاید ہی گزشتہ کافی وقت سے کسی ڈاکٹر یا اسٹاف نے جھانک کر دیکھا ہو ۔ انہوں نے بتایا کہ بند پڑی پی ایچ سی میں شرپسند عناصر کا ڈیرہ بنا ہوا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اس سلسلہ میں سی ایم او سمیت لکھنؤ کے اعلیٰ افسران سے گفتگو کرکے یہاں پر ڈاکٹروں کی تقرری کرانے کی کوشش کریں گی تاکہ علاقہ کے باشندوں کے لئے تعمیر کی گئی پی ایچ سی میں ان کا بہتر علاج ہوسکے ۔ اس سلسلہ میں دیوبند کے سرکاری اسپتال کے انچارج ڈاکٹر اندراج سنگھ نے بتایا کہ وہ ضلع مجسٹریٹ کی جانب سے محکمہ صحت کی میٹنگ میں شامل ہیں ا س لئے ابھی اس سلسلہ میں کچھ گفتگو نہیں کرسکتے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close