دیوبند

پولیس اہلکار کے ساتھ مارپیٹ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ، برسراقتدار پارٹی کے لیڈران کے دبائو میں پولیس نے ابھی تک نہیں کی کوئی کارروائی

دیوبند، 14؍ جون (رضوان سلمانی) سڑک کے کنارے پر بیٹھ کر شراب پی رہے لوگوں کو منع کررہے پولیس اہلکار کے ساتھ مارپیٹ کا معاملہ روشنی میں آیا ہے، یہ واقعہ محلہ سینی کی سرائے کا بتایا جارہا ہے ۔ اس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہورہی ہے ۔ اس میں 5سے 6افراد سڑک کے کنارے بیٹھے شراب پی رہے ہیں ۔ اس دوران خانقاہ پولیس چوکی کے دو پولیس اہلکار رات گشت کے دوران وہاں پہنچے اور ان سے معلوم کرنے لگے ، اسی دوران مذکورہ افراد پولیس اہلکاروں کے ساتھ بحث کرنے لگے ۔ ایک پولیس اہلکار جب ان کی ویڈیو بنانے لگا تو اسی وقت کسی شخص نے پولیس اہلکار کے موبائل پر ہاتھ ماردیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ اس دوران پولیس اہلکار اور ان افراد کے درمیان ہاتھا پائی بھی کی گئی جس میں ایک پولیس اہلکار زخمی بھی ہوگیا۔وائرل ہورہی ویڈیو میں مذکورہ پولیس اہلکار ہاتھ پرلگی چوٹوں کو بھی دکھاتے نظر آرہے ہیں۔ بتایا جارہا ہے کہ برسراقتدار جماعت کے لیڈران کے دبائو کی وجہ سے پولیس نے آج تک پولیس اہلکار کے ساتھ مارپیٹ کرنے کے الزام میں کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔ جب کہ اس معاملہ میں تھانہ انچارج دیوبند اشوک سولنکی کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکار کے ساتھ مارپیٹ نہیں بلکہ شرابیوں کو پکڑنے کے دوران وہ زمین پر گرگیا جس وجہ سے وہ زخمی ہوگیا ہے۔ ملزمان کو پکڑنے کی کوشش کی جارہی ہے اور ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close