دیوبند

آئین کی بقاء اور تحفظ کیلئے ملک کے تمام لوگوں کو آگے آنا ہوگا ۔حاجی فضل الرحمن

دیوبند،30؍ جنوری(رضوان سلمانی) آئین کی بقاء اور تحفظ کیلئے ملک کے تمام لوگوں کو آگے آنا ہوگا اور اس میں اپنا تعاون پیش کرنا ہوگا تبھی یہ ملک سلامت رہ سکتا ہے ان خیالات کا اظہار ممبرپارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے کیا۔ وہ آج یہاں جامعہ رحمت گھگھرولی میں منعقد تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ سہارنپور کی تحصیل بہٹ کے موضع گھگھرولی میں واقع جامعہ رحمت میںآل انڈیا ملی کونسل ضلع سہارنپور کے زیر اہتمام آئین کی بقاء اور تحفظ کے عنوان سے ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں انتظامیہ کے افسران ، ضلع کی معزز شخصیات کے علاوہ علاقائی لوگوں نے شرکت کی۔ تقریب کی صدارت ماسٹر محمد یوسف نے کی اور نظامت کے فرائض تقریب کے کنوینر مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی نے انجام دئے۔ ممبر پارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن ، سرکل آفیسر (سی او ) حلقہ بہٹ وجے پال سنگھ اور جامعہ رحمت کے مہتمم و آل انڈیا ملی کونسل کے ضلع صدر مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی کے ہاتھوں جامعہ کے طلباء اور مستحقین کے درمیان لحاف تقسیم کئے گئے۔ سی او بہٹ وجے پال سنگھ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم سب لوگوں کا یہ فرض ہے کہ وہ اپنے سے کمزور انسانوں کی مدد کیلئے آگے آئیں ۔ غریب و ضرورت مند لوگوں کی مدد کرنے میں جو خوشی حاصل ہوتی ہے وہ دنیا کے کسی اور کام میں نہیں ملتی۔ دنیا میں کوئی انسان کسی سے بڑا یا چھوٹا نہیں ہے یہ سب تفریق انسانوں کیلئے ذریعہ پیدا کی گئی ہے ۔ سی او بہٹ نے کہا کہ ہمیں ان دوریوں کو ختم کرنا ہوگا اور آپس میں پیار و محبت اور بھائی چارے کو بڑھاوا دینے کیلئے مشترکہ کوششیں کرنی ہوگی۔ ممبرپارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے اپنے خطاب میں کہا کہ ضرورت مندوں کی خدمت کرنا سب سے بڑی انسانیت ہے ہمیں ایک دوسرے کی مدد کیلئے آگے آنا چاہئے۔ ایم پی حاجی فضل الرحمن نے آئین کی بقاء اور اسکے تحفظ کے عنوان پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ موجودہ وقت میں سنگھ پریوار کے اشارے پر بھاجپا سرکار آئین کو ختم کرنے کی سازش کر رہی ہے۔ شہریت ترمیمی قانون ، این پی آر اور این آر سی کے ذریعہ حکومت لوگوں کے درمیان نفرت پیدا کرکے انکو تقسیم کرنے کی راہ پر عمل پیرا ہے مگر ملک کے سیکولر عوام سنگھ پریوار اور بھاجپا کی اس سازش کو کبھی کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ انھوں نے کہا کہ یہ سرکار لوگوں کے آئینی حقوق کو سلب کرنے کی طرف گامزن ہے کیونکہ جو بھی شخص حکومت کی غلط پالیسیوں کے خلاف آواز بلند کرتا ہے یہ حکومت اسکو جیل میں ڈالنے کا کام کر رہی ہے۔ ممبرپارلیمنٹ حاجی فضل الرحمن نے اترپردیش کے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ جس شخص کی کوئی بیوی اور بیٹی نہیں ہے اسے خواتین کے درد کا اندازہ نہیں ہو سکتا اسی لئے وزیراعلی یوپی آئین کو بچانے کی خاطر مظاہرہ کرنے والی خواتین کے خلاف بدکلامی کر رہے ہیں جسکی ہم مذمت کرتے ہیں۔ جامعہ رحمت گھگھرولی کے مہتمم اور آل انڈیا ملی کونسل کے ضلع صدر مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی نے کہا کہ ہر سال کی طرح جامعہ رحمت میں اس سال بھی علاقہ کے ضرورت مندوں کے درمیان لحاف اور کمبل تقسیم کئے گئے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ غریب و نادار لوگوں کی مدد کرنے والوں کو اللہ بہت پسند کرتے ہیں اسلئے ہمیں اپنے آس پڑوس میں ایسے لوگوں کا جائزہ لینا چاہئے جو مدد کے مستحق ہوں اور انکی مدد کیلئے ہمیں آگے آنا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ ملک کا آئین ایک ایسا گلدستہ ہے جس میں تمام لوگوں کو انکے حقوق حاصل ہیں اور آئین کو بچانے کی خاطر ہمیں آگے آنا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ ملک کا سیکولر طبقہ مبارکباد کا مستحق ہے جو آئین کو بچانے کیلئے مسلمانوں کے شانہ بشانہ کھڑے ہوکر اس لڑائی کو لڑ رہا ہے۔ اس موقعہ پر چودھری ابوبکر ، مولانا عزیزاللہ ندوی، مولانا طیب قاسمی، مولانا امجد، مفتی واصل، چودھری ہاشم وغیرہ نے بھی تقریب سے خطاب کیا۔ اس دوران مولانا عبدالخالق مغیثی، حافظ ہاشم، قاری عبدالرحیم ، قاری فیضان سرور، مولانا طیب، حیدر رؤف ، مولانا عبدالماجد مغیثی، حاجی غالب، قاری معروف، علی چودھری، حاجی عرفان، عبدالخالق سابق کونسلر، حاجی برکت ، بھائی نوشاد ، سید حسان وغیرہ کے علاوہ جامعہ کے طلباء و اساتذہ اور علاقہ کے ذمہ داران موجود رہے۔ خانقاہ رائے پور کے ناظم الحاج شاہ عتیق کی دعاء پر تقریب کا اختتام ہوا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close