دیوبند

قرآن کریم کتاب ہدایت اور خدا کی جانب سے نازل کردہ لا زوال نعمت عظمی

جناب رسول کریم ؐنے حفاظ کیلئے اللہ کے یہاں بلند درجات اوراعزازات کی بشارتیں دی ہیں:مولانااحمد خضرشاہ مسعودی

دیوبند ،6؍مئی (رضوان سلمانی) دارالعلوم وقف کے شیخ الحدیث اور جامعہ امام محمد انورشاہ کے مہتمم مولانا سید احمد خضر شاہ مسعودی کے صاحبزادے حافظ سید محمد حمدان شاہ نے اپنی رہائش گاہ پر تراویح میں قران مجید گزشتہ شب مکمل کیا،اس موقع پر منعقد مجلس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا سید احمد خضرشاہ نے کہاکہ رمضان المبارک اور قران مجید کے درمیان خصوصی تعلق ہے ، رمضان میں قران مجید کے نزول کے اسباب و حکمتیں اورقران مجید کے عالمگیرپیغام و تعلیمات پر روشنی ڈالی ۔ مولانا نے فرمایا کہ قران مجید خالق کائنات کا آخری کلام ہے جو اسی ماہ مقدس میں نازل فرمایا گیا، اس ماہ مقدس سے قران کریم کو خاص مناسبت ہے چنانچہ رمضان المبارک میں تلاوت کا خاص اہتمام کریں، بڑی خوش بختی ہے ان مومنین کی جو تراویح میں قرآن کریم سننے اور سنانے کا بھی اہتمام کرتے ہیںحدیث پاک میں سرور کائنات جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حفاظ قران مجید کیلئے اللہ تعالی کے یہاں بلند درجات اور اونچے اعزازات کی بشارتیں دی ہیں۔ مولانا نے رمضان المبارک کی اہمیت و فضیلت پر روشنی ڈالتے ہوئے اس کو رحمت و برکت اور خدائی انعامات و اکرام کا مقدس مہینہ قراردیا اور کہا کہ اس ماہ مبارک میں عبادتوں کے ثواب میں اضافہ کردیا جاتا ہے۔انہوں نے قرآن کریم کو کتاب ہدایت اور خدا وند قدوس کی جانب سے نازل کردہ لا زوال نعمت عظمی قرادیا۔ انہوں نے مزید فرمایا کہ خوش نصیب ہیں وہ لوگ جن کو یہ ماہ مقدس نصیب ہوا اور انہوں نے اس میں عبادت کے ذریعے اپنے رب کو راضی کرلیا ۔ مولانا سید احمد خضر نے کہا کہ قرآن اور رمضان کا رشتہ بہت مضبوط ہے اللہ نے قرآن کریم کو رمضان المبارک کے مہینہ میں آسمان دنیا سے زمین پر اتارا ،انہوںنے کہا کہ کلام اللہ کو مکمل کرنے کے لئے اللہ نے ایک رات اس ماہ میں ایسی بھی رکھی جس کی عبادت ۸۰ ہزار راتوںکی عبادت کے برابر ہے ،اس رات میں اللہ نے کلام اللہ کو مکمل کیا ،اور امت مسلمہ کے سہولیت کے لئے اللہ نے اس رات کی نشان دہی کرتے ہوئے اس کو رمضان المبارک کے آخری عشرہ کی طاق راتوں میں رکھا ،اللہ کے بندے طاق راتوں میں جاگ کر اگر عبادت کریں گے تو انہیں اللہ نے بخشنے کا وعدہ کیا ہے ،مولانا نے کہا کہ رمضان المبارک کی ۳۰ ویں شب جو چاند رات کہلاتی ہے یہ یوم الانعام کہلاتی ہے اس رات میں اللہ اپنے ان بندوں کو جنہوںنے رمضان المبارک کا چاند دیکھنے کے بعد روزہ رکھے راتوں کو اللہ کی یاد میں گزارا اور طاق راتوں میں شب بیداری کی ان لوگوں کے لئے یہ رات انعام کی رات ہے ،اس رات کو بھی جاگ کرعبادت کرنا اور اللہ کے یہاں سے انعام لینا نیک بندوں کی عادت میں شمار ہوتا ہے مولانا سید احمد خضر شاہ مسعودی نے مومن کی شان پر تفصیل سے روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اللہ کا مقرب بندہ وہ ہے جو اپنے دل کو نرم رکھے، اپنے دل میں دوسروں کے لئے محبت رکھے اور آپس میں اتحاداور اتفاق قائم کرنے کی غرض سے کوشش کرتارہے تووہ اللہ کا محبوب بندہ بن جاتا ہے ۔انہوںنے کہا کہ رمضان المبارک کا مہینہ اور قرآن کے درمیان ایک خاص رابطہ ہے قرآن اور رمضان ایک دوسرے کے لیے لازم وملزوم ہے۔ انھوں نے نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک میں کلام اللہ کی جس طرح سے تلاوت کی ہے اسی سلسلے کو پورے سال جاری رکھنا چاہئے، جن گھروں میں کلام اللہ کی تلاوت کی جاتی ہو ان گھروں سے شیطان، بلائیں اور آفات دور رہتے ہیںمجلس کے اختتام پر مولانا سید احمد خضر شاہ مسعودی نے کووڈ 19جیسی مہلک وبا کے خاتمہ اور عالم اسلام و عامتہ لمسلمین کیلئے امن وعافیت کی دعاء کرائی۔۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close