دیوبند

ریل مسافرین کے لئے اب 24گھنٹے ریزرویشن کرانے کی سہولت دستیاب: اسٹیشن سے ٹرین چھوٹنے سے آدھا گھنٹہ قبل تک ریزرویشن کرایا جا سکے گا

دیوبند ،11؍اپریل (رضوان سلمانی) ریلوے اسٹیشن پر مسافرین کی سہولت میں مزید اضافہ کرتے ہوئے اب ریزرویشن ونڈو خاص طور پر تتکال ونڈو 24؍گھنٹے کھلی رہیں گی ۔ اس لئے اب ریزرویشن کائونٹر سے رات 8بجے کے بعد بھی ریل مسافرین کو ریزرویشن چارٹ تیار کرنے کے بعد باقی ماندہ سیٹوں کے لئے فوری طور پر ریزرویشن مہیا ہو سکے گا ۔ یہ ریزرویشن متعلقہ ریلوے اسٹیشن سے گاڑی چھوٹنے کے طے شدہ وقت سے آدھا گھنٹہ تک کرائے جا سکیں گے ۔ ریلوے کے جی ایم آشوتوش گنگل گذشتہ شب سہارنپور پہنچے اور انہوںنے صبح کے وقت امبالہ ڈویژن کے ڈی آرایم جی ایم سنگھ اور سینئر ڈی سی ایم ہری موہن بھی ان کے ہمراہ آئے ۔

بعد ازاں جی ایم آشو توش گنگل نے ریلوے افسران کے ساتھ سہارنپور سے انبالہ تک کے ریلوے ٹریک کا معائنہ کیا اور ریلوے اسٹیشن پر صفائی ستھرائی کے نظام کو بھی چیک کیا ۔ ریل مسافرین کے لئے راحت کی بات یہ ہے کہ ریلوے اسٹیشن پر اب ریزرویشن سے متعلق نیا نظام شروع کیا گیا ہے ۔ جی ایم آشوتوش گنگل کے احکامات کے بعد ریلوے اسٹیشن پر 24؍گھنٹے فوری طور پر ریزرویشن کی سہولت کا آغاز کرادیا گیا ہے ۔ رات کو 8 بجے سے صبح 8؍بجے تک ریزرویشن آفس کی ایک ونڈو ریزرویشن کی فوری بکنگ اور ٹکٹ کینسل کرانے کے لئے کھلی رہے گی ۔ اس ونڈو سے رال مسافرین ٹرین کے طے شدہ وقت کے آدھا گھنٹہ قبل تک ریزرویشن کرا سکیں گے ۔ رات کو جانے والی ٹرینوں کے ٹکٹ اور ریزرویشن بھی اسی ونڈو پر مہیا رہیں گے ۔ گذشتہ شب مغربی ریلوے کے جنرل منیجر کے سہارنپور آمد کے موقع پر ریلوے کے سبک دوش ملازمین نے اپنے مختلف مسائل اور مطالبات کو لیکر ایک میمورنڈم سپرد کیا ۔

انہوں نے ریلوے کے اسپتالوں میں لیڈی ڈاکٹروں سمیت زائد ڈاکٹروں کی تعیناتی کا مطالبہ کیا ۔ریلوے پینشنرس تنظیم کے سرپرست رمیش چند شرما کی قیادت میں مغربی ریلوے کے جنرل منیجر کو دئے گئے میمورنڈم میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ سہارنپور علاقہ کے تقریباً 6ہزار ریلوے ملازمین اور سبکدوش ملازمین کے لئے میڈیکل سہولیات مہیا کرائی جائیں ۔ سہارنپور کے ریلوے کے ہاسپٹل کے فی الوقت صرف ایک ڈاکٹر تعینات ہیں ۔ انہوںنے اسپتال میں مزید دو ڈاکٹروں کو تعینات کئے جانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ اس کے علاوہ اسپتال میں لیڈی ڈاکٹر کے نہ ہونے سے پیش آنے والی دشواریوں سے بھی روشناس کرایا اور فوری طور پر ایک لیڈی ڈاکٹر کی تعیناتی کا بھی مطالبہ کیا ۔ جنرل منیجر کو بتایا گیا کہ ریلوے ہاسپٹل میں ایکسرے ،الٹراسائونڈ ،ایم آر آئی وغیرہ کی سہولیات مہیا نہیں ہیں ، اس لئے فوری طور پر مذکورہ سہولیات مہیا کرائی جائیں ۔ اس کے علاوہ میمورنڈم میں یہ بھی مطالبہ کیا گیا ہے کہ میہوترا سمیتی رپورٹ کو نافذ کرکے اسپتال میں پالی کلینک کی سہولت بھی مہیا کرائی جائے ۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close