دیوبند

تعلیمی سلسلہ کو جاری رکھنے کے لئے انتظامیہ نے فیس میں اضافہ کرنے کا عارضی فیصلہ لیا ہے:مولانا اسجد مدنی

دیوبند،7؍مارچ (رضوان سلمانی )کورونا بحران کے بعد اب تعلیمی ادارے رفتہ رفتہ کھلنے لگے ہیں ۔بہت سے تعلیمی ادارے معاشی دشواریوں کے سبب بند ہونے کی کگار پر ہیں ۔تعلیمی اداروں کو باقی رکھنے کے لئے کچھ اداروں نے فیس بڑھانے کے سخت فیصلے بھی لئے ہیں ۔جس پر والدین اور بچوں کے دمہ داران تشویش میں مبتلاء ہیں ۔اسی سلسلہ میں جامعہ اسلامیہ للبنات انٹرکالج دیوبندکی انتظامیہ نے بھی عبوری طور پر فیس بڑھانے اور تعلیمی ادارہ کو بچانے کا فیصلہ لیا ہے ۔فریڈم فائٹر مولانا حسین احمد مدنی ؒ ایجوکیشنل ٹرسٹ کے تحت 15برسوں سے چلنے والا یہ تعلیمی ادارہ عوام میں ہدف تنقید بنا ہوا ہے ، اس لئے کہ یہ ادارہ جو کووڈ بحران سے پہلے تک معمولی فیس لیکر تعلیم کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے تھا اب اس میں تعلیم حاصل کرنے والی طالبات کی فیس میں اضافہ کر دیا گیا ہے ۔ اس اعتراض صورت حال کا جواب دیتے ہوئے ٹرسٹ کے چیئر مین مولانا سید اسجد مدنی نے فون پر بتایا کہ کووڈ کے سخت ترین بحران سے گذرنے کے بعد رفاہی طور پر تعلیمی سلسلہ جاری رکھنا نا ممکن العمل ہو گیا ہے ۔تعلیمی سلسلہ کو جاری رکھنے کے لئے انتظامیہ نے فیس میں اضافہ کرنے کا عارضی فیصلہ لیا ہے ۔ انہوںنے کہا کہ جامعہ اسلامیہ للبنات کی فیس کا موازنہ دیگر تعلیمی اداروں سے کیا جائے ،تو فیس بہت کم ہے ۔انہوںنے کہا کہ فیس کے عبوری اضافہ پر آئندہ سہ ماہی کے بعد نظر ثانی کی جائے گی ۔حالات نے ساتھ دیا تو فیس کا معیار حسب سابق رکھنے کی کوشش کی جائے گی ۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close