دیوبند

ماں باپ پر اولاد کی عمدہ تربیت کی ذمہ داری ہے: مفتی عارف مظاہری

مدرسہ سیدنا عثمان بن عفانؓ میں تکمیل حفظ قرآن کے موقع پر دعائیہ تقریب کاانعقاد

دیوبند،3؍ مارچ(رضوان سلمانی) تحصیل رامپور منیہاران علاقہ کے موضع میانگی میں واقع دینی ادارہ مدرسہ سیدنا عثمان بن عفانؓمیںتکمیل حفظ قرآن کے موقع پر ایک دعائیہ تقریب کاانعقاد کیاگیا۔ جس کی صدارت جمعیۃ علماء تحصیل رامپور منیہاران کے صدر مفتی عارف مظاہری نے کی جبکہ نظامت کے فرائض مدرسہ کے ناظم مولانا راغب نے انجام دیئے۔ تقریب کو خطاب کرتے ہوئے مفتی عارف مظاہری نے قرآن کریم کی عظمت اور اسکی فضیلت پر پر مغز خطاب کیا ۔انہو ں نے کہا کہ اللہ کی ذات سب سے بڑی ہے اس لئے اس کا کلا م بھی سب سے اعلیٰ وارفع ہے، دنیا میں اس کلام سے بڑھ کر جادو اثر پر سوز شیریں اور سہل کلام یقینا ناپید ونایاب ہے، خداوندقدوس کلام اس قدر فائق وممتاز ہے کہ روئے زمین پر کوئی کلام اس کا ہم پلہ نہیں ہوسکتا ،اس کے کلام کا کسی بندے کے سینے میں آجانا کسی عظیم سعادت سے کم نہیں ہے۔انہوںنے کہاکہ ماں کی گودکسی بچہ کے لئے اولین درسگاہ ہوا کرتی ہے، اس گود میں عہدطفلی میں جیسی تربیت دی جائے گی ویسا ہی بچہ آگے چل کر بنے گا۔ اسلئے ماں باپ پر اولاد کی عمدہ تربیت کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ تعلیم گاہوں کا انتخاب دور حاضر کا سب سے پیچیدہ مسئلہ ہے، کیونکہ ایک طرف ہمیں بحیثیت مسلمان کے اپنے بچوں کے عقائد بھی محفوظ رکھنے ہیں اور دوسری طرف بچوں کو دینی تعلیم کے ساتھ ساتھ عصری تعلیم بھی دلانی ہے، انہوں نے کہاکہ علماء اور دانشوران کی ذمہ داری ہے کہ ملت کو متحد کریں ،قوم میں تعلیمی بیداری مہم چلائیں اور دعوت دین میں کوتاہی سے کام نہ لیں۔ جامعہ دعوۃ الحق معینیہ چررھو کے ناظم مولانا شمشیر قاسمی نے اپنے بیان میں کہا کہ اس کتاب کی تاثیر ہے کہ وہ دلوں کو اپنا بنا لیتی ہے ، اس لئے اس سے رشتہ مضبوط کرنا چاہئے، کیوں کہ دنیا جانتی ہے کہ مسلمان جب تک قرآن وسنت کے ساتھ وابستہ رہے ، اس وقت تک بڑے بن کر عزت وقوت اور شان وشوکت کے ساتھ رہے، لیکن جب مسلمانوں کا رشتہ قرآن سے ختم ہوگیا یا کمزور پڑگیا، تو وہ ذلیل ورسوا ہوگئے۔انہوں نے کہاکہ قرآن کی تلا وت گھروں نہ ہونے کی وجہ سے پریشانیاں ہمارا مقدر بن چکی ہیں،آج جو معاشرہ میں برائیاں پیدا ہوئی ہیں یہ ایک دو دن سے نہیں بلکہ برسوں سے ہیں ،جس سے ہمارے نوجوان بے راہ روی کا شکار ہورہے ہیں،جس پر خاص توجہ دینے کی ضرورت ہے۔مولانا راغب نے کہا قرآن کریم واحد کتاب ھے جسمیں آج تک ایک زبر زیر پیش اور ایک نقطے تک کی تبدیلی نہیں ہوسکی دیگر تمام آسمانی کتابوں میں تحریف وتبدیلی کردی گئی لیکن قرآن کریم آج تک محفوظ ھے۔بعد ازاں مدرسہ کے طلبہ 11 سالہ محمد علی اور محمد قاسم نے قرآن پاک حفظ کرنے پر علماء کرام نے انہیںدستار فضیلت سے نوازتے ہوئے ان کے والدین اور اساتذہ کو مبارکباد پیش کی۔مفتی عارف مظاہری کی دعا پر تقریب کا اختتام ہوا۔ اس موقع پر قاری عثمان ،حافظ اعظم ،عرفان، اویس، عبد القادر وغیرہ سمیت اساتذہ اور بستی کے لوگ موجودرہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close