دیوبند

دیوبند : یوم جمہوریہ دارالعلوم ، دارالعلوم وقف،جامعہ امام محمد انور شاہ، جامعہ طبیہ سمیت علاقے کے عصری اداروں میں جوش وخروش کے ساتھ منایا گیا

دیوبند ؍27جنوری (رضوان سلمانی) یوم جمہوریہ دیوبند اور آس پاس علاقہ میں جوش وخروش کے ساتھ منائی گئی۔ اس موقع پر دارالعلوم، دارالعلوم وقف، جامعہ امام محمد انور شاہ، جامعہ طبیہ دیوبند اور دیگر مدارس وعصری اداروں نیز سرکاری دفاتر میں جشن جمہوریہ کا شاندار اہتمام کیا گیا اور پرچم کشائی کی گئی۔دارالعلوم دیوبند میں پرچم کشائی ادارے کے استاذ حدیث مولانا اشرف عباس نے کی۔ اس موقع پر اشرف عباس نے کہاکہ ہندوستان کی سلامتی اس کے دستور کی بقا میں مضمر ہے، دستور کی روح باقی رہی تو یہ ملک بھی باقی رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ملک ہمارے اسلاف نے آزاد کرایا اس کا دستور بنایا جس کو ہم نے قبول کیا اس ملک کا جمہوری نظام ہی اس ملک کی اصل روح ہے۔دارالعلوم وقف میں پرچم کشائی ادارے کے نائب مہتمم مولانا شکیب قاسمی نے کی۔ اس موقع پر انہوںنے کہا کہ اسی دستور کی بنیاد پر ہندوستان دنیا بھر میں نیک نام ہے جب جب ہماری دستورکی روح پامال ہوتی ہے، دنیا میں ہماری بدنامی ہوتی ہے جس سے ہمیں دکھ اور افسوس ہوتا ہے۔ اس موقع پر مولانا شمشاد ،مولانا جمشید عادل ، مولانا غفران، مولانا حسنین ، مولانا سجاد، مولانا اسجد وغیرہ موجود رہے۔ جامعہ امام محمد انور شاہ میں پرچم کشائی ادارے کے مہتمم مولانا سید احمد خضر شاہ مسعودی اور نائب ناظم تعلیمات مولانا فضیل ناصری نے کی۔ اس دوران ادارہ کے مہتمم مولانا احمد خضر شاہ مسعودی نے کہا کہ کوئی ملک جب تک آباد نہیں ہو سکتا جب تک اس ملک کے اندر قربانی نہ دی جائے۔ مجھے افسوس ہے کہ ہمارے ملک کے ہندو مسلمان بھائی ملک کی آزادی کی تاریخ کو بھولتے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک ہندوستان کی مذہبی اعتبار سے بھی بڑی اہمیت ہے۔ یہاں پر ہندو، مسلم، سکھ، عیسائی سبھی لوگ مل جل کر رہتے ہیں۔ ہمیں عہد کرنا چاہئے کہ ہم اس ملک کی ترقی میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔ اس موقع پر ادارہ کے استاذ مولانا فضیل ناصری ، مولانا ابوطلحہ اعظمی، مفتی عبید انور شاہ قاسمی، مولانا بدرالاسلام، مولانا عثمان غنی، مولانا زکی انجم ، مولانا سلیم سمیت ادارہ کے اساتذہ موجود رہے۔

مدرسہ تعلیم القرآن دارالمسافرین میں ادارہ کے (Mohtamim) مہتمم سید عقیل حسین میاں نے پرچم کشائی کی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ملک کی گنگا جمنی تہذیب کی بقاء کے لئے ہمیں کوشش ومحنت کرنی ہوگی ملک میں جمہوری حکومت کے نفاذ کے لئے ہمارے اکابرین نے جو قربانیاں دیں ہیں وہ ناقابل فراموش اور آب زر سے لکھے جانے کے لائق ہے۔ جامعہ طبیہ دیوبند میں پرچم کشائی ادارے کے سکریٹری ڈاکٹر انورسعید نے کی اس موقع پر انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کو جنگ آزادی کی تحریک میں اپنے بزرگوں کے کردار کو عوام کے سامنے نمایاں کرنے کی ذمہ داری خود مسلمانوں کی ہی ہے انہیں اس بات کے اوپر منحصر نہیں رہنا چاہئے کہ ہماری آبائو اجداد کی تعریف دوسرے لوگ کریں گے۔ ایڈمنسٹریٹر ڈاکٹر اختر سعید نے اپنے خطاب میں کہا کہ یہ ملک ہمارا ہے اور اس ملک کو آزاد کرانے میں ہمارے اکابرین نے جو خدمات انجام دی ہیں ان کو فراموش نہیں کیا جاسکتا، ہمیں نسل نو کو اپنے اکابرین کے بارے میں بتانا ہوگا، اس موقع پر کالج اسٹاف موجود رہا۔ دیوبند یونانی میڈیکل کالج میں پرچم کشائی ادارے کے چیئرمین ڈاکٹر قمر الزماں نے کی۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ جمہوریت کے بغیر کسی بھی ملک کی زندگی ،ترقی اور کامیابی کا کوئی تصور کبھی نہیں رہا،ہر ہندوستانی کی مشترکہ ذمہ داریوں کو محسوس کرنا چاہئے ۔ اس موقع پر اسکول اسٹاف موجود رہا۔ مسلم فنڈ ٹرسٹ کے زیر انتظام تعلیمی اداروں مدنی ٹیکنیکل انسٹی ٹیوٹ اور پبلک گرلز انٹر کالج میں بے حد جوش و خروش کے ساتھ یوم جمہوریہ سے متعلق پروگرام منعقد کئے گئے ۔پبلک گرلز انٹر کالج دیوبند میں صبح 10؍بجے ادارہ کے منیجر سہیل صدیقی ،سکریٹری محمد انس اور سابق چیئر مین انعام قریشی نے مشترکہ طور پر رسم پرچم کشائی انجام دی ۔اس موقع پر ایک پر وقار تقریب منعقد کی گئی ۔پروگرام کی صدارت ڈاکٹر محمد ایاز صدیقی نے کی اور نظامت کے فرائض زینب سنبل نے ادا کئے ۔پروگرام کا آغاز یسریٰ انجم کی تلاوت کلام پاک سے ہوا ۔بعد ازاں خوب صورت نعت بنیؐ پیش کی گئی ،جس کے بعد طالبات نے وطنی نغمہ پیش کیا ۔اس موقع پر ادارہ کے منیجر سہیل صدیقی نے طالبات سے خطاب کرتے ہوئے یوم جمہوریہ منائے جانے کا مقصد بیان کرتے ہوئے کہا کہ آج کا دن ہم سب کو ان مجاہدین جنگ آزادی اور عظیم رہنمائوں کی قربانیوں کی یاد دلاتا ہے جو انہوں نے اس ملک کی آزادی اور جمہوریت کو قائم کرنے کے لئے دی تھیں۔دیوبند کے سابق چیئر مین انعام قریشی نے کہا کہ انگریزوں کے تسلط سے چھٹکارا پانے کے بعد یہ غور و فکر شروع ہوا کہ ملک کو صحیح سمت میں لے جانے کے لئے کیا کیا جائے ۔

لہٰذا ڈاکٹربھیم رائو امبیڈ کر کی صدارت میں ایک کمیٹی تشکیل دے کر ہندوستا ن کا آئین مرتب کرکے 26؍جنوری 1950کو نافذ کیا گیا ۔جس میں سب کو یکساں حقوق دئے گئے ،لیکن بد قسمتی کی بات ہے کہ آج ہمارے سامنے عدم مساوات ،بے روز گاری ،پسماندگی اور فرقہ واریت کا عفریت کھڑا ہے ،اس لئے ضروری ہے کہ تقاضوں کے مدنظر ہم خلوص اور حب الوطنی کے جذبہ سے ملک کی ترقی کے لئے صحیح سمت کا تعین کریں۔ادارہ کی پرنسپل صبا حسیب صدیقی نے طالبات سے خطاب کرتے ہوئے ملک کی آزادی کی تاریخ بیان کرتے ہوئے کہا کہ یوں تو ہندوستان 15اگست 1947کو آزاد ہو گیا تھا لیکن 26جنوری 1950کو ہندوستان آزاد جمہوری ملک بن گیا ۔انہوںنے کہا کہ اسی دن کے لئے مولانا ابوالکلام آزاد ،پنڈت جواہر لعل نہرو،مولانا رشید احمد گنگوہی ،شہید اشفاق اللہ خاں ،سبھاش چندر بوس ،مہاتما گاندھی ،مولانا حسین احمد،شیخ الہند مولانا محمود حسن ،خان عبد الغفار اور ہزار بے نام مجاہدین نے اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرکے سب کے لئے آزاد ی حاصل کی ۔ان کے علاوہ صفیہ گوہر ،شائستہ عمیس،نجم عثمانی نے بھی اظہار خیال کیا ۔اس موقع پر طالبات کی جانب سے ثقافتی پروگرام بھی پیش کئے گئے ۔ پروگرام میں طالبات کے علاوہ ادارہ کے سکریٹری مولوی محمد انس ،محمد عدیل صدیقی ،فیضی صدیقی ،ساجد حسن ،محمد عثمان ،محمد غزالی ،حذیفہ ،محمد عارف و دیگر اسٹاف موجود رہا۔نواز گرلز پبلک اسکول میں پرچم کشائی ادارے کے بانی ڈاکٹر نواز دیوبندی کے ہاتھوں عمل میں آئی، اس موقع پر انہوںنے کہاکہ ہمارے اکابرین نے اپنی جانوں کی قربانی دے کر ہندوستان کو انگریزوں کی غلامی سے آزاد کرایا ۔ ہمارا ملک جمہوری ملک ہے ، یہاں کے آئین نے ہمیں اپنی اپنی ذمہ داریاں دی ہیں۔ اس ملک کو بنانے میں ہمیںہر وقت کوششیں کرنی چاہئیں۔ اس موقع پر اسکول اسٹاف موجود رہا۔ اسپرنگ ڈیل پبلک اسکول میں چیئرمین سعد صدیقی نے پرچم کشائی کی اور ساتھ ہی اسکول میں ثقافتی پروگرام پیش کئے گئے ۔

اس موقع پرسعد صدیقی نے بچوں اورتمام اہل وطن کو مبارکباد دیتے ہوئے اپنے صدارتی خطاب میں کہا کہ تعلیم ہی وہ واحد ذریعہ ہے جس کی مدد سے آپ اپنے ماضی اور اس ملک کو آزاد کرانے کی تاریخ سے واقف ہوسکتے ہیں۔انہوںنے کہا کہ آپ اپنے ماضی سے ناطہ جوڑکرہی کامیاب انسان بن سکتے ہیں۔انہوںنے آزادی کی تاریخ بتاتے ہوئے تعلیم کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔ 26؍جنوری کے موقع پرجامعہ رحمت گھگرولی میں ملی کونسل ضلع سہارنپور کے زیر اہتمام ایک پر وقار تقریب منعقد کی گئی ، جسکی صدارت مولانا ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی مہتمم جامعہ ہذا نے کی اور انہو ں نے اپنے ہاتھوں سے پرچم کشائی کی و ترنگے جھنڈے کو سلامی دی ۔اس موقع پر ڈاکٹر عبدالمالک مغیثی نے کہا کہ آج کا دن بھارت کی تاریخ میں بہت ہی اہمیت کا حامل ہے یہی وہ دن ہے جس دن بھارت ایساملک بنا جس میں تمام مذاہب کے لوگوںکو یکساں حقوق دئیے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا ملک پوری دنیا کے اندر اس بات کیلئے جانا جاتا ہے کہ یہاں مختلف مذاہب کے ماننے والے لوگ آپسی اتحاد کے ساتھ ر ہ کر ملک کو ترقی یافتہ بنانے میں کلیدی رول ادا کر رہے ہیں ۔ انہوںنے پروگرام میں شریک طلباء و اساتذۂ جامعہ کو مبارکبادپیش کی کہ انہوں نے محنت کرکے اتنا بہترین پروگرام پیش کیا ۔ اس موقع پر جامعہ ہذا کے تمام طلباء اساتذہ اور قرب و جوار سے بڑی تعداد میںمعززین حضرات شریک رہے۔جامعہ قاسمیہ دار التعلیم و الصنعہ میں یوم جمہوریہ کی تقریب جوش و خروش کے ساتھ منائی گئی اس موقع پر ادارہ کے مہتمم مولانا ابراہیم قاسمی نے کہا کہ آپسی پیار و محبت ہی ہمارے ملک کی پہچان ہے ہمارے ملک ہندوستان کی مذہبی اعتبار سے بھی بڑی اہمیت ہے اس دوران مولانا شاہ عالم قاسمی ،ڈاکٹر محمد اسلم،مفتی منوروغیرہ موجود رہے۔ جامعۃ القدسیات الاسلامیہ للبنات میں بھی یوم جمہوریہ کے موقع پر طالبات نے ثقافتی پروگرام پیش کئے۔ اس موقع پر اسکول کے منیجر قاری عامر عثمانی نے کہا کہ اس ملک کو آزاد کرانے میں ہمارے علماء نے قربانیاں پیش کیں اور اس کی شروعات 1857 میں ہوگئی تھی، جس میں سب سے پہلے علماء نے شرکت کی۔ دیوبند کے تمام تعلیمی اداروں میں بھی یوم جمہوریہ کی تقریب نہایت تزک واحتشام کے ساتھ منائی گئی اور طلبہ کی جانب سے شاندار کلچررپروگرام پیش کئے گئے۔جامعہ زینب للبنات میں رکن عارف عثمانی نے پرچم کشائی کی ۔ اس موقع پر اسکول اسٹاف موجود رہا۔ جہانِ ادب اکیڈمی میں چیئرمین تنویر اجمل نے جھنڈا لہرایا ، اس موقع پر دیش بھگتی گیت ، غزل ، قوالی کا بھی اہتمام کیا گیا ۔ پروگرام کی صدارت معروف قلم کار سید وجاہت شاہ نے کی ۔ اس موقع پر شمیم کرتپور، دلشاد خوشتر، ندیم قریشی، انکور گرگ، فیصل عثمانی، شارق صابری، نبیل عثمانی، کاشف قریشی، سلیم عثمانی، محمد شعیب، ضرار بیگ وغیرہ موجود رہے۔ اس کے علاوہ ،اسلامیہ انٹرکالج، مولانا مدنی میموریل اسکول،حاجی بلال میموریل پبلک اسکول ،نئی روشنی پبلک اسکول، امن نرسری پبلک اسکول، مدر اکیڈمی، دیوبند کے اطراف میں واقع پرائمری وجونیئر ہائی اسکول تگھری، فتح پور، سانپلہ کھتری، مانکی، بی بی پور، عمر پور نین، سلطان پور وغیرہ میں بھی جوش وخروش کے ساتھ یوم جمہوریہ کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں مقامی گرام پردھانوں نے پرچم کشائی کی گئی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close