دیوبند

دیوبند میں بچی کی عصمت دری کرنے والے ملزم کو 87 روز میں عمر قید کی سزا

دیوبند، 23؍ جنوری (رضوان سلمانی) 6 سال کی معصوم بچی کی عصمت دری کرنے والے ملزم کو صرف 87 دن میں عمرقید سزا سناکر جج للیتا گپتا کی عدالت نے نظیر پیش کی ہے ۔ ملزم پر عدالت نے جرمانہ بھی عائد کیا ہے ۔ پولیس نے بھی اس معاملے میں صرف ایک ہفتے کے اندر چارج شیٹ داخل کرکے انصاف دلانے میں اہم رول ادا کیا۔ تفصیل کے مطابق سرکاری وکیل نے بتایا کہ 28اکتوبر 2019کی شام کو دیوبند کے ایک گائوں کی بچی سے عصمت دری کا واقعہ پیش آیا تھا ، بچی کے پڑوسی ستیش کمار نے اس شرمناک واقعہ کو انجام دیا تھا ۔ اہل خانہ نے پولیس کو اطلاع دیتے ہوئے مقدمہ قائم کرایا تھا ، پولیس نے فوراً کارروائی کرتے ہوئے اس واردات سے اگلے روز ملزم ستیش کو گرفتار کرکے جیل بھیج دیا۔ تفتیش میں تمام ثبوت جمع کرکے صرف ایک ہفتے کے اندر پولیس نے ملزم کے خلاف عدالت میں چارج شیٹ داخل کردی تھی ، سرکاری وکیل میگھ راج سینی نے بتا یا کہ 28نومبر کو مقدمہ کی سماعت شروع ہوئی ، میڈیکل رپورٹ فورنسک لیب کی رپورٹ عدالت میں پیش کی گئی اور ساتھ ہی 7افراد کی گواہی عدالت کے سامنے ہوئی ، عدالت نے 22جنوری کو ملزم کو عمرقید کی سزا سنادی ۔ عدالت نے ملزم پر 60ہزار روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔ پولیس پر اب تک مقدمات کو لٹکانے اور چارج شیٹ میں دیری کرنے کا الزامات لگتے رہے ہیں لیکن 6سال کی معصوم بچی کے ساتھ ہوئی درندگی کے معاملے میں پولیس نے اس کہاوت کو توڑ دیا ، پولیس نے صرف 7روز کے اندر تفتیش پوری کی اور ٹھوس ثبوت کے ساتھ ملزم کے خلاف عدالت میں چارج شیٹ داخل کردی۔ اس کے بعد مقدمہ کی پیروی بھی مضبوط طریقے سے کی گئی جس کا نتیجہ یہ رہا کہ صرف 87روز میں ملز کو عمر قید کی سزا سنادی گئی۔ ایس ایس پی دنیش کمار پی نے تفتیش کررہے انسپکٹر اور پیروی ٹیم کو 25ہزار روپے کا انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔ مقدمہ کی تفتیش انسپکٹر یاد رام سنگھ نے کی تھی جس میں بچی کی میڈیکل رپورٹ میں عصمت دری کی تصدیق کی گئی تھی اس کے بعد پولیس نے گواہوں کے بیانات درج کرائے اور ساتھ ہی ملزم کے کپڑوں پر لگے خون کے دھبوں کی فورنسک جانچ کرائی گئی اور اس کے لئے پولیس خود لیب پہنچی تھی اور فوراً جانچ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ فورنسک جانچ میں ملزم کے خلاف پولیس کو ٹھوس ثبوت مل گئے ، گواہوں کے بیانات میڈیکل رپورٹ اور فورنسک جانچ کی بنیاد پر پولیس نے 6نومبر کو ملزم کے خلاف چارج شیٹ داخل کردی تھی جس کے بعد سرکاری وکلاء نے عدالت میں گواہوں کے بیانات درج کرائے اور پوری محنت کرکے صرف 87روز میں ملزم کو عمر قید کی سزا دلائی ۔ پولیس کے اس کا م کی ہر طرف تعریف کی جارہی ہے ۔ اس دوران ایس ایس پی دنیش کما رپی نے ٹیم کو مبارک باد دی ہے اور ساتھ ہی انہوں نے تفتیش کرنے والی ٹیم اور مقدمہ کی پیروی کرنے والی ٹیم کو اپنی طرف سے 25ہزار روپے کا انعام دینے کا اعلان بھی کیا ہے ۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Close