دیوبند

دیوبند، کم نہیں ہورہا ہے ٹھنڈی ہوائوں کا قہر ، بزرگوں اور بچو ں کی صحت کا خاص خیال رکھنے کی ضرورت

دیوبند، 15؍ جنوری (رضوان سلمانی) گزشتہ کئی روز سے چل رہی ٹھنڈی ہوائیں لوگوں کو کپکپارہی ہیں ۔ آج دن میں دھوپ تو نکلی لیکن ٹھنڈی ہوائوں کا اثر کم نہیں ہوا۔ صبح کے وقت تو ٹھنڈ نے بے حال کردیا ، ہڈیوں میں گھس جانے والی سردی محسوس کی جارہی ہے ، ایسے میں بچوں اور بزرگوں کی صحت کا خا ص خیال رکھنے کی ضرورت ہے۔ پہاڑی علاقوں میں ہوئی برف باری کا اثر کئی روز سے بنا ہوا ہے ، ٹھنڈ کے سبب عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ہے ، آج صبح ٹھنڈ کا عالم یہ رہا کہ لوگوں کو روز مرہ کے کام کاج نپٹانے میں بھی دقتوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ آج کم سے کم درجہ حرارت 2ڈگری سیلسیس اور زیادہ سے زیادہ 18ڈگری سیلسیس درج کیا گیا ، جب کہ بدھ کے روز درجہ حرارت 6.2اور زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 16.4ڈگری سیلسیس رہا تھا ۔ اس طرح سے گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران ہی درجہ حرارت 3.2ڈگری سیلسیس کی گراوٹ درج کی گئی۔ مغربی یوپی میں سب سے ٹھنڈا ضلع سہارنپور رہا، ضلع سہارنپور میں دہرہ دون اور رشی کیش سے زیادہ سردی رہی ، ٹھنڈ نے لوگوں کی زندگی کو مفلوج بناکر رکھ دیا ہے۔ پہاڑوں میں ہورہی برف باری کا اثر اب میدانی علاقوں میں زیادہ دیکھنے کو مل رہاہے ، برف پگھلنے کے بعد پہاڑوں سے آرہی برفیلی ہوائیں جسم کو سُن کررہی ہیں ۔ مغربی یوپی میں کسی بھی اضلاع میں کم سے کم درجہ حرارت 6ڈگری سے کم نہیں رہا لیکن سہارنپور ضلع میں کم سے کم درجہ حرارت 2ڈگری تک پہنچ گیا۔ آج صبح آسمان میں زبردست کہرا چھایا رہا ، 10بجے دھوپ نکل گئی، دھوپ نکلنے کے بعد بھی لوگوں کو کوئی راحت نہیں ملی، ٹھنڈی ہوائیں جسم کو سُن کررہی ہیں ۔ دوپہر کے بعد تو لوگوں کی حالت مزید خراب ہوگئی ، شام ہوتے ہوتے ٹھنڈ میں مزید اضافہ ہوا اور لوگ گھروں میں قید ہونے پر مجبور ہوگئے۔ محکمہ موسمیات نے ٹھنڈ میں اضافہ کے امکانات ظاہر کئے ہیں ، محکمہ موسمیات کے انچارج امیش کمار نے بتایا کہ پہاڑوں پر برف پگھلنے کے بعد ٹھنڈ میں مزید اضافہ ہوگا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close