دیوبند

دیوبند، گریجویٹ ایم ایل سی کے انتخاب کی ووٹنگ پرامن طریقے پر اختتام پذیر

دیوبند، یکم؍ دسمبر (رضوان سلمانی) میرٹھ زون کے گریجویٹ اور ٹیچر ایم ایل سی انتخاب کے لئے آج سخت سیکورٹی انتظامات کے درمیان آج صبح 8بجے ووٹنگ شروع ہوئی، ووٹنگ کے لئے میرٹھ اور سہارنپور کمشنری کے 9اضلاع میں 429بوتھوں پر ووٹنگ کا نظم کیا گیا تھا ۔ ٹیچر اور گریجویٹ ایم ایل سی انتخاب کی ووٹنگ کے لئے کل 488بوتھوں کا انتظام کیا گیا تھا ۔ سیکورٹی کے پیش نظر ان بوتھوں کو 57زونل اور 108سیکٹر میں تقسیم کیا گیا، سبھی بوتھوں پر پولیس ، پی اے سی اور مجسٹریٹ کا نظم کیا گیا تھا ۔ ووٹنگ پرامن طریقے پر کرائی گئی ۔ گریجویٹ ایم ایل سی کے انتخاب میں 45.5فیصد پولنگ ہوئی، جب کہ ٹیچر ایم ایل سی کی پولنگ 75فیصد تک پہنچ گئی۔ ضلع سہارنپور میں ایم ایل سی کے انتخاب کی ووٹنگ صبح 8بجے سے شروع ہوئی ، ٹھنڈ کی وجہ سے صبح 10بجے تک ووٹنگ سست رہی ، مگر بعد میں ووٹروں میں کافی جوش وخروش دیکھنے کو ملا، دوپہر 12بجے تک صرف 12فیصد ووٹ ڈالے گئے، مگر بعد میں بڑی تعداد میں رائے دہندگان ووٹ ڈالنے کے لئے ووٹر مراکز پر پہنچے ۔ ایم ایل سی کے انتخاب میں کرونا کو دیکھتے ہوئے بڑی احتیاط برتی گئی ، اس دوران سوشل ڈسٹینسنگ کا پورا خیال رکھا گیا، اسی کے ساتھ ساتھ سینی ٹائزر ، ماسک وغیرہ کا بھی خیال رکھا گیا۔ سہارنپور ضلع میں 15پولنگ مراکز پر انتظامیہ کی جانب سے سیکورٹی کے پختہ انتظامات کئے گئے تھے ۔ ڈی ایم اکھلیش کمار اور ایس ایس پی ڈاکٹر ایس چننپا نے بھی ووٹنگ مراکز کا دورہ کیا اور وہاں کے حالات کا جائزہ لیا۔ کہیں سے کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کی کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی ہے۔ گریجویٹ ایم ایل سی کے انتخاب میں 30امیدواروں نے اپنی قسمت آزمائی، اس مرتبہ کانگریس، بی جے پی اور سماج وادی پارٹی نے پارٹی کے نشان پر الیکشن میں حصہ لیا ۔ اب سبھی امیدواروں کی قسمت بیلٹ باکس میں بند ہوگئی ہے ، اب ان کی قسمت کا فیصلہ 3دسمبر کو ہونے والی گنتی کے بعد ہی معلوم ہوپائے گا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close