دیوبند

دیوبند، بی جے پی کے ضلع معاون میڈیا ترجمان کے خلاف مقدمہ قائم

دیوبند، 27؍ نومبر (رضوان سلمانی) دیوالی کے موقع پر بی جے پی لیڈر کے ذریعہ اپنے مکان کی چھت پر کھڑے ہوکر فائرنگ کرنے کے معاملے میں پولیس نے اعلیٰ افسران کی ہدایت پر مقدمہ قائم کیا ہے۔ پولیس کے مطابق ملزم کے لائسنس کو منسوخ کرنے کے لئے بھی ضلع مجسٹریٹ کو رپورٹ پیش کردی گئی ہے ۔ شہر کے محلہ کیلاش پورم کے رہنے والے بی جے پی ضلع معاون میڈیا ترجمان نتن گپتا کے ذریعہ گزشتہ دیوالی کے روز اپنے مکان کی چھت پر کھڑے ہوکر خوشی میں فائرنگ کی تھی جس کا ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد علاقائی انتظامیہ کے ہوش اڑگئے تھے ۔ یہ معاملہ برسراقتدار پارٹی کے لیڈر سے جڑا ہونے کی وجہ سے پولیس کے اعلیٰ افسران کی ہدایت کا انتظار کررہے تھے۔ جب اس پورے معاملے نے طول پکڑا تو دیوبند پولیس نے ایس ایس پی سہارنپور ایس چننپا کی ہدایت پر دیوبند کوتوالی پولیس نے بی جے پی لیڈر کے خلاف فائرنگ کرنے اور دہشت پھیلانے کے الزام میں مقدمہ قائم کیا ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ مقدمہ قائم ہونے کے بعد پولیس بی جے پی لیڈر نتن گپتا کے گھر بھی پہنچی تھی اور علاقے کے باشندوں سے پورے معاملے کی تفصیلی معلومات بھی حاصل کی۔ حالانکہ بی جے پی لیڈر نتن گپتا نے وائرل ویڈیو کے معاملے میں اسی روز ایک دیگر ویڈیو وائرل کرکے اپنی صفائی پیش کی تھی اور کہا تھا کہ یہ ویڈیو 4سے 5سال پرانی ہے۔ دیوالی سے اس ویڈیو کا کوئی تعلق نہیں ہے۔ بی جے پی لیڈر کا کہنا تھا کہ پانچ سال قبل بندوق کی صفائی کرنے کے بعد فائرنگ کی گئی تھی ۔ اس سلسلہ میں تھانہ انچارج اشوک سولنکی نے بتایا کہ اس پورے معاملے کی رپورٹ ضلع مجسٹریٹ کو ارسال کی جارہی ہے ۔ فائرنگ کے معاملے میں لائسنس منسوخ کئے جانے کی کارروائی کی جائے گی۔ دوسری جانب لبکری گائوں کے رہنے والے ڈاکٹر زبیر عالم نے دیوبند تھانہ میں تحریر دیتے ہوئے بتایا کہ وہ بھائیلہ ریلوے کراسنگ پر واقع اپنے پلاٹ پر جارہا تھا ، اسی دوران پیچھے سے آئی بلورو کار کے ڈرائیور نے کار کا پہیہ اس کے پیر پر چڑھادیا ، زبیر کا الزام ہے کہ جب اس نے اس کی مخالفت کی تو وہ گالی گلوچ کرنے لگا ، اتنا ہی نہیں اس نے اپنے ایک ساتھی کے ساتھ مل کر اس کے ساتھ مارپیٹ شروع کردی ۔ یہی نہیں مذکورہ شخص نے چاقو سے اس پر حملہ کردیا جس سے وہ زخمی ہوگیا، شور مچانے پر آس پاس کے لوگ جمع ہوگئے جنہیں دیکھ کر ملزم جان سے مارنے کی دھمکی دے کر موقع سے فرار ہوگیا۔ اطلاع ملنے پر زبیر کے اہل خانہ موقع پر پہنچے اور علاج کے لئے سرکاری اسپتال میں داخل کرایا گیا، پولیس کا کہنا ہے کہ تحریر مل گئی ہے اور معاملہ کی تفتیش کی جارہی ہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close