دیوبند

دیوبند، کسانوں نے اپنے مطالبات کو لے کر ایس ڈی ایم کی معرفت وزیر اعظم کو ارسال کیا میمورنڈم

دیوبند، 27؍ نومبر (رضوان سلمانی) پچھم پردیش مکتی مورچہ کے قومی صدر بھگت سنگھ ورما کی قیادت میں کسانوں نے ایس ڈی ایم دیوبند راکیش کمار کی معرفت وزیر اعظم ہند نریندر مودی کو ایک سات نکاتی میمورنڈم ارسال کیا اور ریل چکاّ جام کرنے کا انتباہ دیا گیا ۔ میمورنڈم میں ہریانہ اور پنجاب کے کسانوں پر دہلی میں ہوئے ظلموں اور لاٹھی چارج کی مذمت کی گئی۔ میمورنڈم میں کہا گیا ہے کہ کسانو ںکا استحصال کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کیا جائے گا۔ پنجاب اور ہریانہ کے کسانوں پر آنسو گیس کے گولے ، پانی کی بوچھار اور لاٹھی چارج کرنا مرکزی حکومت کو اس سلسلے میں معافی مانگنی ہوگی ۔ میمورنڈم میں وزیر اعظم پر زرعی قانون بناکر کسانو ںکو تحریک چلانے کے لئے مجبور کرنے کا الزام عائد کیا گیا۔ بھگت سنگھ ورما نے کہا کہ موجودہ مرکزی حکومت میں کسانوں کو ان کی فصلوں کی واجبی قیمت نہیںمل رہی ہے ۔ حکومت کی غلط پالیسیوں کے سبب کسان قرض مند ہوکر خودکشی کرنے پر مجبور ہورہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 70سالو ں میں کسان اپنے مطالبات کو لے کر سڑکوں پر آنے کو مجبور ہیں ۔ بہتر ہو کہ حکومت کسان مخالف بلوں کو واپس لیں ۔ میمورنڈم میں زرعی قانون واپس لینے ، سوامی ناتھ کی رپورٹ لاگو کرکے کسانوں کو ان کی فصلوں کی واجبی قیمت دلانے ، کسانوںکے قرض معاف کرنے ، گنے کی قیمت 600روپے فی کوئنٹل کا اعلان کرنے ، زرعی کاموں کے لئے کسانوں کو مفت بجلی دینے ، کسانو ںکے گنے کی بقائے کی ادائیگی کے لئے سود سمیت ادا کرنے اور شوگر فیکٹری میں ہورہی گھٹتولی کو فوراً واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔ بھگت سنگھ ورما نے کہا کہ جب سے مرکز اور ریاست میں بی جے پی حکومتیں برسراقتدار آئی ہیں ، کسانوں پر ظلم کئے جارہے ہیں اور ان کی کسی بات پر توجہ نہیں دی جارہی ہے، انہو ں نے کہا کہ حکومت نے کسانوں کے مطالبات کو نہیں سنا اوران کا حل نہیں کیا گیا تو کسان سڑکوں پر اترکر احتجاج کرنے پر مجبور ہوںگے۔ میمورنڈم دینے والوں میں راشٹریہ کسان مزدور کمیٹی کے ضلع صدر لوکیش رانا، جتیندر سنگھ، واجد علی تیاگی، قاری سعید احمد، وسیم احمد، اخلاق، حاجی سلیمان، رشی پال سنگھ سمیت عہدیداران اور کارکنان موجود رہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close