دیوبند

دیوبند، پرالی جلانے پر ہوسکتا ہے جرمانہ اور جیل : اوجھا

دیوبند، 26؍ نومبر (رضوان سلمانی) حکومت وانتظامیہ کی جانب سے جاری احکامات کے بعد آج گنا وکاس پریشد اور تروینی شوگر فیکٹری نے مشترکہ طور پر پرالی بیداری ریلی نکالی گئی ، اس بیداری ریلی کے دوران لوگوں کو پرالی کے جلانے سے ہونے والے نقصانات سے آگاہ کیا گیا اور بتایا گیا کہ اب پرالی کو جلانا قانوناً جرم ہے ۔ واضح ہو کہ یہ بیداری ریلی سہکاری گنا سمیتی احاطے سے شروع ہوکر ریلوے روڈ ، چینی مل کیبن یارڈ ہوتے ہوئے ابہٹہ شیخاں ، کلسٹھ، جھبیرن، لکھنوتی، کرڈی، بھائیلہ، ساکھن کلاں، ساکھن خورد، باستم، سلطان پور اور کرنجالی ہوتے واپس گنا سمیتی احاطے میں ختم ہوئی۔ اس ریلی کے دوران گنا محکمے کے افسران اور کارکنان نے کسانوں کو دھان کی پرالی اور گنے کی پتی نہ جلانے کا مشورہ دیا۔ اس کے علاوہ کسانوں کو اس تکنیک سے آگاہ کیا گیا جس کو اپناکر فصلوں کی باقیات سے کھاد تیار کرسکتے ہیں تاکہ ماحولیاتی آلودگی سے بچا جاسکے اور کھیتوں کی مٹی کی زرخیزی بھی باقی رہے۔ بیداری ریلی کے دوران کسانوں کو بتایا گیا کہ پرالی کو جلانا قانوناً جرم ہے ، ریلی کے ذمہ داران نے بتایا کہ مذکورہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف جرمانہ اور جیل بھیجے جانے کی کارروائی ہوسکتی ہے۔ اس ریلی میں سینئر گنا وکاس انچارج اجے کمار اوجھا اسپیشل سکریٹری پریم چند چورسیا، تروینی شوگر فیکٹری کے معاون گنا منیجر وی ایس تومر سمیت فیکٹری کے افسران وملازمین موجود رہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close