دیوبند

گائوں کے باشندوں نے تھانہ بڑگائوں کے ایس ایس آئی کے خلاف کیا مظاہرہ

دیوبند، 17؍ جنوری (رضوان سلمانی) تھانہ بڑگاؤں میں تعینات ایس آئی کے ذریعہ بے قصور نوجوانوں کا استحصال کئے جانے اور مارپیٹ کئے جانے پر یہاں دیوبند علاقہ کے گاؤں نونابڑی کے باشندوں نے ایس آئی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے اس کا تبادلہ کرنے کی مانگ اور کہاکہ اگر ایس آئی کو بڑگاؤں تھانہ سے ہٹایانہیں گیا تو گاؤںکے لوگ بڑی تحریک چلائینگے۔ گاؤں نونابڑی کے سماجی کارکن حافظ معین الدین نے ایس آئی کا تبادلہ کرنے کی مانگ کرتے ہوئے بتایا کہ تھانہ بڑگاؤں میں تعینات ایس آئی دیپک چودھری نے گاؤں کے ایک بے قصور نوجوان کو اٹھاکر اس کو 24؍گھنٹے تک بند رکھا اور اس کے ساتھ زبردست مارپیٹ کی،محض شک کی بنیاد پر اس نوجوان کے ساتھ بے رحمی سے مارپیٹ کی گئی،حالانکہ بعد میں جانچ کے دوران نوجوان پوری طرح بے قصور نکلا ،جب گاؤں کے لوگوںنے ہنگامہ کیا تب کہیں جاکر نوجوان کو چھوڑا گیا۔ راؤ معین الدین نے کہاکہ تھانہ بڑگاؤں کی پولیس مسلسل نوجوانوں کااستحصال کررہی ہیں، مذکورہ ایس آئی کا رویہ حکومت اور علاقہ کے لئے بے حد خطرناک ہے اور علاقہ کے لوگ اس سے عاجز آگئے ہیں۔ انہوں نے بتایاگاؤںکے لوگوں نے آج ایس آئی دیپک چودھری کے خلاف زبردست احتجاج مظاہرہ کرکے سرکار سے مانگ کی گئی وہ فوری طورپر ایس آئی کا تبادلہ کیا جائے ۔ حافظ معین الدین نے بتایا کہ اگر تھانہ بڑگاؤں کے ایس آئی کونہیں ہٹایاگیا تو گاؤں کے لوگ بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرہ کرینگے اور جب تک اس کو ہٹایا نہیں جائے گا اس وقت تک احتجاج چلتا رہے گا۔ مظاہرہ کرنے والوں میں حافظ معین الدین کے علاوہ حاجی فرمان، راؤ مسرور علی،نوین کمار،نادر رانا،محسن علی،سونو،صدام،راؤ عادل،مرغوب،ٹھیکیدار،عرفان علی سمیت بڑی تعداد میں کارکنان موجودرہے۔

مزید پڑھیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close