دیوبند

دیوبند، حکومت وانتظامیہ کی جانب سے جس طریقہ پر چھوٹے تاجروں کا استحصال کیاجارہا ہے وہ ناقابل برداشت ہے: قاضی یونس صدیقی

دیوبند، 26؍ اکتوبر (رضوان سلمانی) دیوبند میں اترپردیش ویاپاری ادھیوگ بندہوویاپارمنڈل کی جانب سے تاجروں کی ایک میٹنگ منعقد کی گئی۔ میٹنگ کے دوران مقررین نے کہا کہ حکومت اور انتظامیہ نے تاجروں کو مسلسل پریشان کرنے کے لئے نئے نئے طریقہ آزمانے شروع کردیتے ہیں ، جس کی وجہ سے تاجروں کو اپنے روزگار چلانا مشکل ہوگیا ہے لیکن اب تاجروں کو کسی قیمت پر استحصال نہیں ہونے دیا جائے گا۔ تفصیل کے مطابق پیر کے روز اترپردیش ویاپار ادھیوگ بند ہوویاپار منڈل کی ایک میٹنگ منعقد ہوئی جس میں تاجروں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے تنظیم کے ضلع صدر قاضی یونس صدیقی نے کہا کہ گزشتہ کافی عرصہ سے حکومت وانتظامیہ کی جانب سے جس طریقہ پر چھوٹے تاجروں کا استحصال کیاجارہا ہے وہ ناقابل برداشت ہے اور تمام چھوٹے تاجر اس استحصالی رویہ سے بہت زیادہ پریشان ہیں لیکن اب اس طرح کے رویہ کو برداشت نہیں کیاجائے۔ تنظیم کے مقامی دفتر پر منعقدہ میٹنگ کے دوران تاجروں نے اپنی پریشانیاں اورمسائل بیان کئے۔ اس موقع پر قاضی یونس صدیقی نے بتایا کہ تاجروں کے حقوق کے لئے تنظیم مسلسل جدوجہد کررہی ہے۔ انھوں نے تمام تاجروں سے اپیل کی کہ وہاپنے حقوق کی لڑائی لڑنے کے لئے چھوٹے بڑے تاجروں کے مسائل کے حل کے لئے ہر سطح پر جدوجہد کرے گی۔ اس موقع پر تنظیم کے جوائنٹ سکریٹری حاجی ذیشان، ندیم صدیقی، عارش، غفران، صغیر انصاری، اسماعیل قریشی، شاداب، جنید صدیقی، عثمان، کاشف عثمانی اورسونو تیاگی وغیرہ موجودرہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close