دیوبند

بھارتیہ اسٹیٹ بینک کی ایگری کلچر برانچ ملازمین کی وجہ سے تنازعات کا مرکز بنتی جارہی ہے

دیوبند، 11؍ اگست (رضوان سلمانی) بھارتیہ اسٹیٹ بینک کی ایگری کلچر برانچ اپنے ملازمین کی وجہ سے تنازعات کا مرکز بنتی جارہی ہے ، بینک کا کیشیئر صارفین کا کام نہ کرکے ان سے روز بروز نازیبا سلوک کررہا ہے ، کیشیئر کے طو رطریقوںسے پریشان صارفین نے بینک منیجر سے کیشیئر کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ شہر کے ریلوے روڈ پر واقع بھارتیہ اسٹیٹ بینک کی کرشی برانچ ہے۔ سی بی ایس برانچ ہونے کے باوجود بھی بینک میں اسٹیٹ بینک کی دیگر برانچوں کے اکائونٹ میں رقم جمع کرانے کے لئے بینک آرہے صارفین کو ٹرخایا جاتا ہے ۔

بینک کے کیش کائونٹر پر تعینات ملازم ستیہ پال کیشپ ونڈو پر کیش جمع کرنے کے لئے لائن میں لگے صارفین کا کام روک کر ونڈو کے پیچھے سے اپنے ملنے والوں کا کام کررہا ہے ، اگر کوئی گراہک ایسا نہ کرنے سے منع کرتا ہے تو وہ اس کے ساتھ نازیبا سلوک کرتا ہے۔ عالم یہ ہے کہ اسٹیٹ بینک کی دیگر برانچوں کے لئے کیش جمع کرنے کے لئے آنے والے صارفین کو یہ کہہ کر منع کردیا جاتا ہے کہ کرشی برانچ ہے اور یہ کام مین برانچ میں ہوتا ہے ، جب کہ بینکنگ اصولوں کے مطابق ایسا کوئی اصول نہیں ہے۔ آج بینک میں شہر سے باہر کی برانچ کے سیونگ اکائونٹ میں رقم جمع کرانے پہنچے شہر کے تاجروں کو بھی بینک کیشیئر ست پال نے یہ کہتے ہوئے کام کرنے سے منع کردیا کہ یہ کام جی ٹی روڈ پر واقع مین برانچ میں پیسہ جمع ہوتا ہے ۔ تاجران کی جانب سے بینک منیجر سے شکایت کرنے پر منیجر کی مداخلت کے بعد تاجروں کی رقم جمع ہوسکی۔ اس دوران بینک میں کافی دیر تک ہنگامہ آرائی ہوتی رہی ۔ منیجر تلک رام گوتم کاکہنا ہے کہ اگر کیشیئر کے ذریعہ صارفین کا پیسہ جمع نہ کرکے انہیں الٹے سیدھے اصول بتائے جارہے ہیں تو یہ غلط ہے۔ کیشیئر کے خلاف اس سے قبل بھی کئی شکایتیں موصول ہوئی ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ اس کی شکایت بینک کے اعلیٰ افسران کو بھیجی جائے گی۔ دوسری جانب بھارتیہ اسٹیٹ بینک کی ایگریکلچر برا نچ میں منعقدہ کسانوں کی میٹنگ میں بینک افسران نے کسانوں کو کووڈ19؍ کے دوران احتیاطی تدابیر اختیار کرنے اور زرعی شعبہ میں بہتر پیدا وار کرنے اور ترقی کرنے کے ضروری ٹپس دیئے۔ آج منعقد میٹنگ میں بینک منیجر اروند کمار گپتا اور نیرج کمار شکلا نے بینک کی طرف سے چلائی جارہی کسانوں کے لئے اسکیموں کی معلومات دی۔ اسسٹنٹ منیجر سنیل پانڈے موجودہ کووڈ19؍ کے دوران میں نہ صرف کسانوں کو بہتر پیدا وار کرنے کے طریقہ بتائے بلکہ ان مشکل حالات میں معاشی ترقی کے مثبت پہلوؤں کو اختیار کرنے پر زور دیتے ہوئے کہاکہ بینک ہر وقت آپ کے ساتھ اسلئے آپ لوگوں زرعی پیداوار میں بہتر سے بہتر کرنے کی اپنی کوششوں کو جاری رکھنا چاہئے۔ انہوںنے کسانوںکی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کسانوں کے لئے 8.25؍ کروڑ روپیہ کے 236؍ کسانوں کو قرض کے لیٹر دیئے۔ علاقائی منیجر دگ وجے شرما نے کسانوں کو زرعی اسکیموں کے بتاتے ہوئے زرعی تکنیکی کے بارے میں بھی معلومات دی۔ منیجر سنیل کمار جین اور برانچ منیجر تلک رام گوتم نے کورونا مہاماری سے بچاؤ کے لئے ضروری احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کا مشورہ دیا اورکہاکہ ماسک کے استعمال کے ساتھ ساتھ صفائی ستھرائی کا بھی خصوصی خیال رکھنا چاہئے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close