دیوبند

وزرات صحت،ریاستی حکومت اور مقامی انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ گائیڈ لائن پر عمل کرتے ہوئے عید الاضحی اور دیگر تہوار منائیں: مولانا احمد خضر شاہ

دیوبند، 30؍ جولائی (رضوان سلمانی) دیوبند کی سماجی ،مذہبی اور سیاسی شخصیات نے عیدالاضحی اور دیگر تہواروں کے مدنظر ایک مشترکہ اپیل جاری کرتے ہوئے کہاکہ بڑے پیمانے پر اجتماع کی صورت میں کورونا وائرس کی وبا مزید پھیلنے اور خطرناک صورت اختیار کرنے کا اندیشہ ہے ،اسلئے وزرات صحت،ریاستی حکومت اور مقامی انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ گائیڈ لائن پر عمل کرتے ہوئے عید الاضحی اور دیگر تہوار منائیں۔ جامعہ امام محمد انور شاہ کے مہتمم مولانا سید احمد خضرہ شاہ مسعودی نے عالمی پیمانے پر کووڈ 19؍ کے خطرات اور حکومت کی جانب سے حفاظتی نقطہ نظر سے جاری گائیڈ لائن پر کاتذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ چونکہ مہلک وباء سے احتیاط کے لئے اجتماعی طورپر عبادات کرنے پر پابندی ہے، اسلئے تمام مسلمانوں کو یکم اگست کو عیدالاضحی کی نماز محدود تعدادمیں فیس ماسک لگا کر اور معاشرتی فاصلہ کے ساتھ اپنے گھروں یا مساجد میں اداکرنی چاہئے ۔

انہوں نے کہاکہ قربانی کے دوران صفائی ستھرائی اور سینٹائز کے ساتھ ساتھ اس بات کا بھی خیال رکھا جائے کہ کسی کے بھی جذبات مجروح نہ ہوں۔ مولانا نے کہاکہ مکمل امن و امان کے ساتھ عیدالاضحی کا تہوار منائیں اور حکومت و انتظامیہ کابھرپور تعاون کریں۔ دیوبند اسمبلی حلقہ کے سابق رکن اسمبلی معاویہ علی نے ایک اپیل جاری کرتے ہوئے کہاکہ تمام طبقات اپنے اپنے تہوار پر امن طریقہ سے منائیں۔انہوں نے کہاکہ مذہبی روا داری کو برقرار رکھنے کے لئے ہر فرد کو آگے آنا چاہئے،کیونکہ امن کی برقراری سے ہی ملک کی ترقی ممکن ہے،

معاویہ علی نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ عیدالاضحی کے تینوں دنوں میں قربانی کا فریضہ ادا کرتے وقت صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھا جائے اور قربانی کے بعد فضلہ کو ہرگز سڑکوں یا گلیوں میں نہ ڈالیں بلکہ صفائی کرنے والوں کے تعاون سے کچرہ اٹھانے والی گاڑیوں میں ڈالیں۔ دیوبند کی معروف سماجی شخصیت اور پریس ایسوسی ایشن کے صدر منوج سنگھل نے اپیل کے دوران کہاکہ جہاں ایک طرف قربانی کا تہوار عیدالاضحی ہے وہیں دوسری جانب رکشا بندھن کا تہورا ہے، ان دونوں تہواروں کے لئے حکومت کی جانب سے واضح گائیڈ لائن جاری کردی گئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ دیوبند صدیو ں سے گنگا جمنی تہذیب کا گہوارہ ہے اور ہمیشہ سے یہاں ہندو مسلم ایک دوسرے کے تہوار میں مل جل مناتے ہیں،

انہوں نے کہاکہ دیوبند کے لوگ ہمیشہ کی طرح اس بار بھی مل جل کر دونوں تہوار منائے گیں اور اپنی قدیم فرقہ وارانہ ہم آہنگی کا ثبوت پیش کرینگے۔جامعہ دارالعلوم اسعدیہ سرساوہ کے استاد مولانا عثمان خورشیدی نے تمام ہم وطنوں کو عیدالاضحی کی مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ دیوبندآپسی بھائی چارہ کا گہوارہ ہے اور یہ بستی ہندو مسلم ایکتا کی قدیم مثال ہے،

اس مرتبہ عیدالاضحی اور کشا بندھن کے تہوار ساتھ ساتھ ہیں اسلئے دونوں فرقوں کو پر امن طریقہ سے ایک دوسرے کے جذبات کا خیال رکھتے ہوئے نیز حکومت کی جانب سے جاری گائیڈ لائن پر عمل کرتے ہوئے تہوار منانے کا عہد کرناچاہئے۔دوسری جانب سماجی تنظیم مانو اتھان سمیتی کی میٹنک میں سمیتی کے صدر ڈاکٹر محمد ارشد نے کہاکہ عید الاضحی ،ہولی اور دیوالی سمیت سبھی تہوار آپسی بھارہ کی اور محبت کی علامت ہیں، انہوں نے کہاکہ تہواروں سے آپسی بھائی چارہ اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی مضبوط ہوتی ہے۔ انہوں نے بیماریوں سے حفاظت کے احتیاطی اقدامات کرنے اور عیدالاضحی کے موقع پر صفائی کا خاص خیال رکھنے کی اپیل کی ہے۔ساتھ ہی میونسپل بورڈ سے عیدالاضحی کے موقع پر صفائی ستھرائی،پانی اور بجلی وغیرہ کامعقول بندوبست کرانے کی مانگ کی ہے۔ ا س دوران نعام احمد،نفیس احمد،ڈاکٹر رضوان،سعید احمد،محبو حسن وغیرہ موجودرہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close