دہلی

مرکزی حکومت کی دوٹوک،فی الحال ہر عمر گروپ کے لیے ویکسینیشن نہیں

نئی دہلی6اپریل(آئی این ایس انڈیا) ملک بھرمیں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے معاملات کے درمیان وزارت صحت نے سب کو ویکسین دینے کے مطالبے پرردعمل ظاہر کیا ہے۔ منگل کومنعقدہ ایک پریس کانفرنس میں سکریٹری راجیش بھوشن نے پھرکہاہے کہ حفاظتی ٹیکے لگوانے کا پہلا مقصد لوگوں کو موت سے بچانا ہے اور دوسرا صحت کا نظام بناناہے۔پورے ملک میں دو مقاصدکے لیے ویکسین دی جارہی ہیں۔ جس کو اس کی ضرورت ہو اسے دی جاتی ہے۔ بھوشن نے کہاہے کہ آج بھی برطانیہ میں ہر ایک کے لیے یہ ویکسین نہیں کھولی گئی ہے۔ امریکہ میں ، ویکسین عمر کے مطابق دی گئی ہے۔ فرانس میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ 50 سال سے اوپرکے لوگوں کوجو خطرہ سے دوچار ہیں ، انہیں ویکسین دی جائے گی۔ دوسرے ممالک کے بارے میں بات کریں تو سویڈن میں 65 سال سے زیادہ عمر کے افرادکوویکیسن دی جارہی ہے۔آسٹریلیا میں ، 70 سال سے اوپر والے افراد کو دیا جارہا ہے اور دوسری قسمیں بھی دی جارہی ہیں جو دی جارہی ہیں۔ بھوشن نے کہاہے کہ ویکسین بغیر کسی منصوبے کے نہیں دی جاتی ہے۔ اسی دوران کوروناکی رفتار پر نیتی آیوگ کے رکن وی کے پال نے کہاہے کہ اس بار کورونا کی رفتار آخری بار سے زیادہ ہے ، لہٰذاآپ محفوظ رہیں۔ ایک غیر معمولی صورتحال پیش آرہی ہے اور اگلے 4 ہفتے بہت اہم ہیں۔جب کہ انتخابی ریاستوں میں خوب ریلیاں ہورہی ہیں،جہاں الیکشن نہیں ہے وہاں ہی عوام کونصیحت کی جارہی ہے۔اس کے علاوہ یہ سوال بھی اہم ہے کہ جب اتنے زیادہ لوگوں کوویکسین دی جاچکی ہے توکیسزکیوں بڑھ رہے ہیں،اس کے علاوہ اب تک یہی ثابت ہواہے کہ ویکسین کوروناسے بچائوکی ضمانت نہیں ہے کیوں کہ ویکسین لینے کے بعدبھی کئی لوگوں کوہواہے۔پھراس مہم اوراتنے پیسے خرچ کرنے کافائدہ کیاہوا۔یہ سوال سوشل میڈیاپرہورہاہے لیکن اب تک اس کاکوئی معقول جواب نہیں دیاجاسکاہے۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close