دہلی

ملک کے عوام کے لیے ویکسین نہیں ، دوسرے ممالک کو فروخت کررہے ہیں : ہائی کورٹ کا تبصرہ، سیرم اور بھارت بائیوٹیک کی تیاری کی رپورٹ مانگی

نئی دہلی4مارچ(آئی این ایس انڈیا)
دہلی ہائی کورٹ نے جمعرات کو سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا اور بھارت بائیوٹیک کو ہدایت کی کہ وہ کورونا ویکسین تیار کرنے کے لیے اپنی صلاحیتوں کے بارے میں معلومات فراہم کریں۔نوبھارت ٹائمزکے مطابق اس نے یہ تبصرہ بھی کیاہے کہ ملک کے عوام کے لیے ویکسین پوری نہیں ہورہی ہے اورہم دوسرے ممالک کوفروخت کررے ہیں۔دونوں اپنی تیاریوں کی صلاحیت بتائیں۔ سیرم انسٹی ٹیوٹ کوویشیلڈ ویکسین تیار کررہا ہے ، جبکہ بھارت بائیوٹیک کوکوئن تیار کررہا ہے۔عدالت نے مرکزی حکومت سے یہ بھی کہا کہ وہ کووید 19 کے ویکسین لینے سے فائدہ اٹھانے والوں کی درجہ بندی کرنے کی وجہ واضح کرے۔ در حقیقت ، پہلے مرحلے میں ، کورونا ویکسین طبی کارکنوں اور فرنٹ لائن کارکنوں کے لیے تھیں۔ دوسرے مرحلے میں سینئر شہری اور 45 سے 59 سال کی عمر کے افراد شامل ہیں جو پہلے ہی سنگین بیماری میں مبتلاہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close