دہلی

گزشتہ6 سالوں میں تمام اداروں پر منظم طریقے سے حملے ہورہے ہیں: راہل گاندھی

نئی دہلی ،27؍فروری(آئی این ایس انڈیا)
راہل گاندھی تین روزہ تمل ناڈو کے دورے پر ہیں۔ ہفتے کے روز وہ ریاست کے توتوکڑی میں تھے ، جہاں ان کا زبردست استقبال کیا گیا۔ ایک خطاب کے دوران راہل گاندھی نے مرکز کی مودی حکومت اور راشٹریہ سویم سیوک سنگھ پر حملہ کرتے ہوئے آر ایس ایس منظم طریقے سے تمام اداروںکو خراب کرنے کا الزام لگایا۔ سابق کانگریس صدر نے کہا کہ اگر اداروں کے مابین توازن بگڑتا ہے تو قومی پریشانی ہوتی ہے۔ گزشتہ6 سالوں سے تمام اداروں پر منظم انداز میں حملہ کیا جارہاہے۔ یہ افسوسناک ہے کہ ہندوستان میں جمہوریت کا خاتمہ ہوگیا ہے کیونکہ ایک تنظیم آر ایس ایس ہمارے ملک کے ادارہ جاتی توازن کوبرباد کررہی ہے۔اس موقع پر انہوں نے پی ایم مودی پر بھی تنقید کی۔ راہل نے کہا کہ سوال یہ نہیں ہے کہ وزیر اعظم مفید ہیں یا بیکار۔ سوال یہ ہے کہ وہ کس کے لئے کارآمد ہیں۔ گاندھی نے کہا کہ وزیر اعظم صرف دو لوگوں کے لئے مفید ثابت ہوئے ہیں ، اور وہ ہیں ’ہم دو ہمارے دو‘ ، جو کی ان کااستعمال اپنی دولت میں اضافہ کے لئے کررہے ہیں ، جبکہ وزیر اعظم مودی غریبوں کے لئے بیکار ہیں۔ واضح رہے کہ راہل گاندھی کا اشارہ امبانی اور اڈانی کی طرف ہے۔راہل گاندھی نے کہا کہ سیکولرازم ہماری ثقافت اور تاریخ کی اساس ہے۔ اس ملک میں سیکولر ازم پر حملہ ہورہا ہے۔ آر ایس ایس اور بی جے پی اس کی قیادت کر رہے ہیں۔ وایناڈ سے کانگریس کے رکن اسمبلی نے کہا کہ یہ صرف آئین پر حملہ نہیں بلکہ تاریخ اور ثقافت پر حملہ ہے۔ اسے روکنا بہت ضروری ہے۔اس کے بعد انہوں نے خارجہ پالیسی کے حوالے سے مودی حکومت کو نشانہ بنایا ، راہل گاندھی میں کہا کہ چین نے ہندوستان کے کچھ اسٹریٹجک علاقوں پر قبضہ کرلیا ہے۔ پہلے اس نے ڈوکلام میں آئیڈیا کو ٹیسٹ کیا ، انہوں نے دیکھا کہ ہندوستان نے کوئی رد عمل ظاہر نہیں کیا ، پھر انہوں نے اروناچل پردیش کے لداخ میں اس آئیڈیا کو دہرایا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close