پٹنہ

خدمت خلق کے ذریعہ در حقیقت ہم اپنی ہی دنیا اور آخرت سنوار رہے ہیں: حضرت امیر شریعت

امارت شرعیہ میں ڈاکٹروں سے ملاقات، ہیلتھ سے متعلق اہم تجاویز پر غور وخوض

پٹنہ 13؍ اکتوبر (2021) (ہندوستان اردو ٹائمز) حضرت امیر شریعت مولانا احمد ولی فیصل رحمانی مدظلہ العالی امیر شریعت کی ذمہ داری سنبھالنے کے بعد لوگوں سے ملاقات کرکے لگاتار اِس بات کی کوشش کر رہے ہیں کہ کیسے امارت شرعیہ کے زیر نگرانی کاموں کو تیز رفتاری سے آگے بڑھایا جائے۔ اسی سلسلہ کی ایک کڑی آج پٹنہ سمیت مختلف اضلاع کے ڈاکٹروں سے ملاقات بھی تھی، تاکہ صحت کے میدان میں بہترین خدمات پیش کی جاسکیں اور موجودہ ہاسپیٹل کو بہتر بنائے جانے کی جانب قدم اٹھایا جائے۔ اس ملاقات میں کم وبیش چالیس ڈاکٹر صاحبان نے شرکت کی مجلس میں موجود تمام ڈاکٹر صاحبان نے اپنا تعارف اور اپنی اسپیشلیٹی کو بتایا۔

میٹنگ میں ڈاکٹر صاحبان کی جانب سے مختلف باتیں سامنے آئیں۔ مثلاً مولانا سجاد میموریل ہاسپیٹل میں موجود جو شعبے قائم ہیں ان کو بہتر کیا جائے اور اِس سمت ہم میں سے جن کے تعاون کی بھی ضرورت پڑے گی ہم لوگ اپنا تعاون پیش کریں۔ یہ بات بھی آئی کہ بزرگوں نے جن مقاصد سے امارت کو قائم کیا ہے، اس کی جانب ہم لوگوں کو اقدام کرنے کی ضرورت ہے۔ اسلامی معاشرہ کے ساتھ ساتھ سوشل ویلفیئر، ہیلتھ اور ایجوکیشن کی جانب بھی خاص توجہ دیے جانے کی ضرورت ہے۔ دیگر اقوام اور مذاہب والوں کو بھی اِس کے ذریعہ فائدہ پہنچانے کی کوشش کی جائے۔ اس کے علاوہ نرسنگ کالج، ڈائلاسس کا بہترین نظام، ڈلیوری سسٹم کو اور زیادہ پاور فل بنانے کے ساتھ ساتھ ایمرجنسی کی جانب خصوصی توجہ کی گذارش کی گئی۔ اس بات پر بھی زور دیا گیا کہ کیسے اِس ہاسپیٹل کو اُس درجہ تک پہنچایا جائے جہاں درمیانی طبقہ کے علاوہ اعلی طبقہ کے لوگ بھی علاج کرنے میں سکون اور اطمینان محسوس کریں، اس کے علاوہ اور بھی بہت سی اہم باتیں میٹنگ میں ڈاکٹر صاحبان کی جانب سے پیش کی گئیں۔

حضرت امیر شریعت نے ڈاکٹروں سے اپنے خطاب میں کہا کہ ہمیں یہ یاد رکھنا چاہیے کہ ہم قوم کے لیے جو خدمت کر رہے ہیں در حقیت اس کے ذریعہ ہم اپنی ہی دنیا اور آخرت کو ہی سنبھال رہے ہیں۔ پیش کردہ تجاویز پر حضرت امیر شریعت نے فرمایا کہ یہ ساری تجویزیں نوٹ کر لی گئی ہیں، ان شاء اللہ جتنا جلد ممکن ہوگا، اِن پر عمل کیا جائے گا۔ میٹنگ میں نائب امیر شریعت مولانا محمد شمشاد رحمانی قاسمی، قائم مقام ناظم مولانا شبلی القاسمی کے علاوہ ڈاکٹر عارف حسن، ڈاکٹر منور حسن، ڈاکٹر آنند کمار، ڈاکٹر کاشف رحمان، ڈاکٹر عتیق احمد، ڈاکٹر فوزیہ شفیع، ڈاکٹر نصرت یاسمین، ڈاکٹر ناہید فاطمہ، ڈاکٹر وسیمہ عرشی، ڈاکٹر غزالہ اسلام، ڈاکٹر یاسر حبیب، ڈاکٹر جاوید اشرف، ڈاکٹر جاوید انور، ڈاکٹر اشرف علی، ڈاکٹر شاہین، پروفیسر محفوظ الرحمن، ڈاکٹر ذاکر، ڈاکٹر راغب، ڈاکٹر شفیع اللہ، ڈاکٹر محمد کامران، ڈاکٹر طارق امام، ڈاکٹر ذاکر بلال، ڈاکٹر مامون الرشید، ڈاکٹر اطہر امام، ڈاکٹر مناظر حسین،ڈاکٹر نظیر احمد خان، ڈاکٹر محی الدین اشرفی،ڈاکٹر طارق شہاب، ڈاکٹرخلیق الزماں مظفر پور، ڈاکٹر توصیف نثار، ڈاکٹر واجد، ڈاکٹر محمد تقی امام، ڈاکٹر نثار، ڈاکٹر مسلم شیوہر، ڈاکٹر آصف علی خان،ڈاکٹر امان اللہ، ڈاکٹر کاشف قمر، ڈاکٹر حسنین قیصر، ڈاکٹر محمد شاداب، ڈاکٹر حامد صاحبان کے علاوہ دیگر مشہور ومعروف ڈاکٹرز حضرات نے شرکت کی۔
حضرت امیر شریعت نے فرمایا کہ یہ پہلی ملاقات ہے لیکن آخری نہیں۔ ہم بار بار ملیں گے اور ہماری کوشش ہوگی کہ ہیلتھ کے شعبہ کو مثالی بنائیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close