حیدرآباد

اردو زبان ہماری تہذیب و ثقافت ہے جس کا احترام ضروری : رپورتاژ نگاری کے جلسہ تقسیم انعامات سے مہتاب قدر اور دیگر اہم شخصیات کا خطاب

حیدرآباد(پریس نوٹ) ’’اردو صرف زبان ہی نہیں بلکہ تہذیب بھی ہے۔اردو ہماری ماں کی زبان ہے اس لئے اس کااحترام بھی ضروری ہے‘‘ اور نوجوان نسل کو اردو کی طرف راغب کرنا ہماری ذمہ داری ہے۔ ان خیالات کا اظہارصدر جلسہ اردو گلبن جدہ کے بانی و معروف شاعر مہتاب قدر نے گوگل میٹ آن لائن پر منعقدہ رپورتاژ نگاری کے مقابلہ کے جلسہ تقسیم انعامات میں کیا ۔ جلسہ کے مہمان خصوصی بی بی رضاخاتون اسسٹنٹ پروفیسر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی نے اپنے تاثرات پیش کرتے ہوئے کہا کہ طلبہ کا مشاہدہ گہرا ہے ان میں احساسات کو پیش کرنے کی صلاحیتیں بھی موجود ہیں ۔ضرورت اس بات کی ہے کہ انہیں اس طرح کے پلیٹ فارمس زیادہ سے زیادہ مہیا ہوں جہاں وہ اپنی صلاحیتوں کامظاہرہ کرسکیں اور وہ کسی احساس کمتری کا شکار ہوئے بغیر اپنے خیالات کا اظہار کر سکیں اوریہ موقع انہیں رفیعہ نوشین نے فراہم کیا ہے جس کے لئے وہ مبارکباد کے حقدار ہیں۔

مصطفیٰ علی سروری اسوسی ایٹ پروفیسرشعبہ صحافت مانو نے کہا کہ مہتاب قدر اور رفیعہ نوشین یہ اردو کے وہ دیوانے ہیں جو اردو کا نہ ایک روپیہ کما رہے ہیں نہ کھا رہے ہیں بلکہ اپنی کمائی اردو پر خرچ کر رہے ہیں ۔اردو کے ایسے ہی دیوانوں کی وجہ سے اردو آگے بڑھ رہی ہے۔رفیعہ نوشین نہ کسی سے کوئی گلہ کرتی ہیں نہ شکایت بس اپنے حصہ کی شمع جلائی جارہی ہیں۔انہوں نے اردو کے اساتذہ سے جو اردو کے نام پر روٹی کھارہے ہیں ان کو آگے آنے کی اپیل کی۔ڈاکٹرعبدالقدوس صدر شعبہ اردو گورنمنٹ ڈگری کالج حسینی علم نے اردو اساتذہ کے پوسٹ کو کالجس سے برخواست کرنے پر حکومت پر سخت برہمی کا اظہار کیا اور اس ضمن میں نمائندگی کرنے پر زور دیا ۔انہوں نے کہاکہ آج حیدرآباد میں آہستہ آہستہ اردوکونقصان پہنچ رہا ہے۔ اس کے لیے ہم سب کو جدوجہد کرنا چاہئے۔

آخر میں 28 فروری 2021 کو اردوہال حمایت نگر میں منعقد شدہ رپورتاژ نگاری کے مقابلہ کے انعام یافتہ گان کا اعلان کیا گیا ۔ انعام اول ریسرچ اسکالر فریدہ بیگم (1111) روپے ،انعام دوم محسن خان (777) روپے ،انعام سوم ریسرچ اسکالر تبسم آراء کو (555) روپے نیز دو ترغیبی انعامات اسماء فاطمہ بی کام فائنل ائیر کو (222) اور حامد حسین کو بھی(222) بالترتیب دیئے گئے۔ یہ رقمی انعامات اورتوصیف نامے اردو گلبن جدہ کی جانب سے پیش کئے گئے ۔ ناظم اجلاس رفیعہ نوشین نے فرداً فرداً سب کا شکریہ ادا کیا ۔ اس پروگرام میں محفل خواتین کی سکریٹری نشر و اشاعت ثریا جبین ، لکچرر اسلم فاروقی اور اکبر بھی موجود تھے -نوجوان نسل میں فروغ اردو کے اس پروگرام کو ناظرین نے بے حد پسند کیا ۔رفیعہ نوشین نے کہاکہ آگے وہ بھی اس طرح کے ادبی مقابلے منعقدکرتی رہیں گی تاکہ نوجوان نسل اردو میں لکھنے پڑھنے کی طرف راغب ہوں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close