حیدرآباد

’’ادب سلسلہ‘‘ ہم عصر ادبی رسائل کی دنیا میں ایک قابل قدر اضافہ

’’ادب سلسلہ‘‘کے فکشن نمبر پر معروف ناقداور استادپروفیسر علی احمدفاطمی کا اظہارخیال

حیدرآباد(ہندوستان اردو ٹائمز)پرو فیسر علی احمد فاطمی اردو زبان و ادب کے ایک نامور ادیب، محقق و نقاد اور استاد ہیں۔ جن کی مختلف اصناف میں مختلف النوع موضوعات پر درجنوں کتابیں شائع ہوئی ہیں۔ موصوف سیاست اور تاریخ پر بھی گہری نگاہ رکھتے ہیں اور اس حوالے سے بھی وقتاً فوقتاً خامہ فرسائی کرتے رہتے ہیں۔ علمی و ادبی حلقوں میںعلی احمد فاطمی کی ادبی خدمات کو قدر کی نگاہوں سے دیکھا جاتا ہے۔”ادب سلسلہ” کی خدمات کو سراہتے ہوئے پروفیسر موصوف نے کہا کہ ہم عصر ادبی رسائل میں جو جہت اور سمت مذکورہ رسالے کی ہے وہ بہت ہی اطمینان اور تسلی بخش ہے جس کے سارے شمارے اپنی مثال آپ ہیں۔ انھوں نے ایڈیٹر موصوف کو اس حوالے سے کئی مشورے بھی دیے تاکہ رسالہ ادبی صحافت کی دنیا میں اپنی منفرد پہچان بنا سکے ۔پرو فیسر علی احمد فاطمی کا تحقیقی اور تنقیدی سفر چار عشروں پر مشتمل ہے نیز موصوف کی درس و تدریسی خدمات بھی قابل تحسین ہیں۔ شعبہ اردو الہ آباد یونیورسٹی نے ان کی سرپرستی میں اعلیٰ پائے کے کارنامے انجام دیے ہیں۔علی احمد فاطمی کی کتابوں میں”ترقی پسند تحریک سفر در سفر”، ”سجاد ظہیر ایک تاریخ ایک تحریک”، ”علی سردار جعفری اورتخلیقی جہات‘‘،’’پریم چند نئے تناظر میں”، ” اقبال اور الہ آباد”، ’فراق گورکھپوری شاعر اور دانشور‘ ’فیض ایک نیا مطالعہ‘ ’سید احتشام حسین ذکر و فکر‘‘ ’علی سردار جعفری تخلیقی جہات” اور ”کامریڈ منٹو” شامل ہیں۔پروفیسر علی احمد فاطمی کو ان کی ادبی خدمات کے اعتراف میں ریاست اور بیرون ریاست میں درجنوں انعامات و اعزازات سے نوازا جا چکا ہے۔علاوہ ازیںآپ کئی ملکوں کے اسفار کر چکے ہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close