جھارکھنڈ

جھارکھنڈ کابینہ میں کروناکی سیندھ : نصف کابینہ کرونا متأثر ، ایک ہلاک ، اب تک 22 فیصد ممبرانِ اسمبلی متأثر

رانچی ،۹؍دسمبر ( آئی این ایس انڈیا ) جھارکھنڈ کے آدھے سے زیادہ وزیر کروناوائرس کی گرفت میں ہیں۔ 11 رکنی کابینہ میں چھ وزیر کرونا سے متأثر ہوچکے ہیں ان چار صحت یاب ہوچکے ہیں وزیر خزانہ رامیشور اوراؤں قرنطینہ کے ایام مکمل کرباہر آچکے ہیں ،جبکہ اقلیتی وزیر حاجی حسین انصاری کرونا کے باعث انتقال کر گئے۔ وہ 26 ستمبر کوکرونا سے متاثر ہوئے تھے،حسین انصاری 4 اکتوبر کو رانچی کے میدانتا اسپتال میں آخری سانس لی تھی ۔اب تک 81 رکنی اسمبلی میں تقریباً 22 فیصدممبران ِ اسمبلی کرونا متأثر ہوچکے ہیں۔ اس میں حکمران جماعت کے 11 اور اپوزیشن کے 18 ارکان اسمبلی شامل ہیں۔وزیر تعلیم جگرناتھ مہتو کو کرونا کی وجہ سے پھیپھڑوں کی پیوند کاری کرانی پڑی تھی، انفیکشن کی وجہ سے ان کے پھیپھڑے مکمل طور پر ناکارہ ہوچکے تھے۔ 28 ستمبر کو ریمس میں 20 دن رہنے کے بعد انہیں نجی اسپتال میں داخل کیا گیا تھا، جب یہاں بھی صورتحال بہتر نہیں ہوئی تو انہیں چنئی کے نجی اسپتال لے جایا گیا۔ ڈاکٹر کے مطابق اب ان کی صحت بہتر ہو رہی ہے۔ اگر سب کچھ ٹھیک رہا تو ، اس ماہ کے آخر تک انہیں اسپتال سے چھٹی دے دی جائے گی ۔وزیر صحت بناّ گپتا کی کروناٹیسٹنگ رپورٹ 18 اگست کو دیر سے آئی۔ صبح ہوتے ہوئے انہوں نے تفتیش کے لئے سمپل دیا ،اور کابینہ کے اجلاس میں شرکت کی۔ ان کی اس رپورٹ کے بعد ، کابینہ کے تمام وزراء کو آئی سولیٹ میں رہنا پڑا۔ وزیر صحت کا ریمس میں علاج ہواتھا، وہ اب مکمل طور پر صحت مند ہیں۔ ان کے علاوہ وزیر زراعت بادل پتر لیکھ اور پینے کے صاف پانی کی وزارت کے وزیر متھلیش ٹھاکر بھی کرونا سے متاثر ہوئے ہیں۔چھ وزرا کے علاوہ ، 12 ارکان اسمبلی بھی کرونا متاثر ہوئے ہیں۔ ان میں سے پانچ کا تعلق بی جے پی سے ہے۔ اس کے علاوہ اے جے ایس یو میں سے دو کانگریس اور ایک ممبراسمبلی لیفٹ ہیں

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close