جھارکھنڈ

سینئر صحافی انیس کے یوم پیدائش پرصحافیوں میں خوشی کا ماحول دیکھا گیا

صحافی ساتھیوں نے اپنے تحفوں سے سے دیا انوکھا پیغام

جمشید پور (ایم ندیم احسن) جمشید پور پریس کلب میں پریس کلب کے ممبر سینئرصحافی محمد انیس کی یوم پیدائش کے موقع پر انہیں مبارکباد دینے والوں کا تانتا لگا رہا مبارکباد دینے والوں میں صحافیوں کے علاوہ کیء معززین شہر بھی شامل تھے ساتھی صحافی انہیں مبارکباد دے رہے تھے اور آپس میں چہلیں بھی کر رہے تھے اس موقع پر اس وقت محفل گلزار دار بن گیء اور ہنسی کے فوارے چھوٹنے لگے جب پربھات خبر کے صحافی سنجیو بھاردواج اور زی ٹی وی کے مکیش نے انہیں پھول گوبھی کا تحفہ پیش کیا صحافی انیس نے ان کے گراں قدر تحفے کو قبولیت بخشتے ہوئے خوشی کا اظہار کیا -انہوں نے کہا کہ موجودہ دور میں لوگوں کا لائف اسٹائل بدل گیا ہے چائنیز پکوان اور مرغن غذا لوگوں کی پسند بن گئی ہے جس کی وجہ سے بیٹ کی بیماریوں کا شکار ہونے لگے ہیں لوگ ‘ ایسے میں گوبھی کا انمول تحفہ دے کر ہمارے ساتھیوں نے مجھے اور سماج کو ایک بہترین پیغام دیا ہے کہ "سبزی کھاؤ اور بیماری بھگاؤ” صحافی انیس نے اپنے تمام چاہنے والوں سے کہا کہ کیا ہی بہتر ہوتا کہ اس انمول تحفہ کے ساتھ ہمارے ساتھی 101روپے کا لفاف بھی پیش کرتے انہوں نے کہا کہ ابھی وقت باقی ہے ہمارے چاہنے والے خیر اندیش اس قیمتی مشورہ پر عمل کرکے ایک مثال پیش کر سکتے ہیں انہوں نے یقین دلایا کہ لفافہ پیش کرنے والے ساتھیوں کو وہ مایوس نہیں کریں گے اور ان تمام ساتھیوں کو ان کی یوم پیدائش پر پریس کانفرنس میں ملنے والا تحفہ ایک ایک کرکےانہیں پیش کریں گے فوٹو جرنلسٹ امجد خان نے اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سنجیو بھاردواج اور مکیش جی نے بے حد انوکھا تحفہ پیش کرکے اور انیس بھائی نے بے حد قیمتی مشورہ دے کر ہماری آنکھیں کھول دی ہیں سہارا سمے کے کیمرہ مین اکبر نے امجد خان کے خیالات سننے کے بعد اپنی جوابی تقریر میں اپنے تجربے کی بنیاد پر کہا کہ صحافی کی آنکھیں کبھی بند نہیں ہوتین ہمیشہ کھلی رہتی ہیں انہوں نے کہا کہ ان کے پیچھے بھی ایک آنکھ ہوتی ہے اور وہ صحافی کی بیگم کی آنکھ ہوتی ہے جہاں اس نے ٹیڑھی میڑھی چال چلی بیگم آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر اس طرح جواب طلب کرتی ہیں کہ پسینے چھوٹ جاتے ہیں- کیمرہ مین انور شریف اور جاوید عالم نے سبزی خوری کی افادیت اور اہمیت کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ "جان ہے تو جہان ہے” لہذا سبزی خوری کی عادت ڈال کر ہم صحافیوں کو سماج کے سامنے ایک اچھا مثال پیش کرنا چاہیے -ادت وانی کے سنیل پانڈے نے میزتھپتھپاکر اس تجویز پر خوشی کا اظہار کیا ان کی دیکھا دیکھی دوسرے صحافیوں نے بھی میز تھپتھپا کر اور اپنے دانتوں کی نمائش کرکے مسرت کا اظہار کیا اس پر کچھ ساتھیوں نے بینچ پر کھڑے ہو کر اپنی ناراضگی جتاتے ہوئے خبردار کیا کہ مرغن غذاؤں پر پابندی لگائی گئی تو سبزی کی قیمت آسمان کو چھونے لگے گی اور غریب عوام جومرغن غذاؤں کا سوچ بھی نہیں سکتے ان کے لیے سبزی کا خیال بھی خواب بن جائے گا اس پر کچھ لوگ حمایت میں میں تو کچھ لوگ مخالفت میں آواز بلند کرنے لگے سردی کے موسم میں ماحول گرم ہوتا دیکھ کر دینک جاگرن کے سینئر صحافی مجتبیٰ حیدر رضوی نے بیچ بچاؤ کراتے ہوئے کہا کہ اس معاملے میں آخری فیصلے پر روک لگائی جائے اور آئندہ د وسرے صحافی کے یوم پیدائش کے موقع پر ہونے والے اجلاس میں پریس کلب کے عزت ماب صدر کی رضامندی سے اس مسئلہ پر ووٹنگ کیا جائیگا رضوی کے اس مشورے کو سبھی نے پسند کیا اور دانت نکوس کر تمام صحافیوں نے رضامندی کا اظہار کیا

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close