جھارکھنڈ

پوسٹ مارٹم کیلئے رانچی کے آرآئی ایم ایس پہنچا ’مردہ شخص‘ ہو گیا زندہ

رانچی،27مئی(آئی این ایس انڈیا) جھارکھنڈ کے رانچی میں ایک حیران کن معاملہ سامنے آیا ہے۔بجلی کا کرنٹ لگنے سے مرنے والے ایک شخص کے بھائی نے دعوی کیا ہے کہ منگل کو جب اس کے بھائی کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے آرآئی ایم ایس کے میں لایا گیا تو مردہ زندہ ہو گیا تھا۔فوت شدہ شخص کے خاندان والوں نے کہا کہ جیسے ہی اسے ہسپتال میں داخل کیا گیا، اس کے کچھ دیر بعد پھر اس کی موت ہو گئی۔ڈاکٹروں نے مردہ کے گھر والوں سے کہا کہ اگر وقت پر یہاں لائے ہوتے شاید اس کو بچایا جا سکتا تھا۔

دراصل معاملہ لوہردگا ضلع کے کھرتا گاؤں کا ہے۔یہاں کے باشندے جتیندر اوراؤں گاؤں میں ہی لگائے گئے خیمے کو کھول رہے تھے، تبھی اوپر سے گزر رہی 11 ہزار وولٹ کی لائن کے تار کی زد میں وہ آ گیا،جس سے جتیندر بری طرح جھلس گیا۔واقعہ صبح 7:30 بجے کے قریب کا ہے۔جیسے ہی گھر والوں کو معاملے کی اطلاع ملی وہ جتیندر کو لے کر چانہو بلاک کے ایک کمیونٹی ہیلتھ سینٹر پر لے کر آ گئے۔یہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا اور لاش کو چانہو پولیس کے حوالے کر دیا۔پولیس لاش کو لے کر پوسٹ مارٹم کے لئے رانچی کے راجندر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (آرآئی ایم ایس کے) میں لے آئی۔

مرنے والے کے چھوٹے بھائی سکندر بھی پولیس کے ساتھ ہسپتال پہنچے۔انہوں نے کہاکہ ہم صبح 11 بجے سی ایچ سی سے نکلے اور دوپہر 1 بجے آرآئی ایم ایس پہنچے،جب بھائی کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے ٹرالی پر لٹایا توآرآئی ایم ایس کے عملے نے کہا کہ یہ زندہ ہے، اس کی دھڑکن چل رہی ہے،اسے ہسپتال کے مرکزی ایمرجنسی وارڈ میں شفٹ کر دو،تاہم منتقل کئے جانے کے فورا بعد، ایمرجنسی وارڈ کے ڈاکٹروں نے کہا کہ ان کی موت ہو گئی ہے۔ڈاکٹر نے کہا کہ اگر نوجوان کو تھوڑی دیر پہلے لایا جاتا تو اسے بچایا جا سکتا تھا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

متعلقہ خبریں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close