جموں کشمیر

محبوبہ مفتی نے حراست میں لینے کا لگایا الزام، بیٹی التجاکو کیاگیا نظربند

سری نگر،27 ؍نومبر( آئی این ایس انڈیا ) جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلی اور پی ڈی پی کی سربراہ محبوبہ مفتی نے مبینہ طور پر الزام لگایا ہے کہ انہیں دوبارہ حراست میں لیا گیا۔ انہوں نے الزام لگایا ہے کہ انہیں اپنے کنبہ سے ملنے نہیں دیا جارہا ہے۔ سابق وزیر اعلی نے بیٹی التجاپر کو بھی نظر بند کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔ انہوں نے ٹویٹ کیاکہ مجھے ایک بار پھر غیر قانونی طور پر حراست میں لیا گیا ہے۔ دو دن سے جموں و کشمیر انتظامیہ مجھے پلوامہ کے متاثرین سے ملنے کے لئے پلوامہ جانے کی اجازت نہیں دے رہی ہے۔ لیکن بی جے پی کے وزرا ء اور ان کے کٹھ پتلیوں کو کشمیر کے کونے کونے میں گھومنے کی اجازت ہے، لیکن سکیورٹی کا مسئلہ صرف میرے معاملے میں ہے۔محبوبہ نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ وہ آج پریس کانفرنس کریں گی۔ پی ڈی پی چیف نے کہا کہ میڈیا سے مختلف امور پر بات ہوگی ۔ مفتی نے ایک اور ٹویٹ میں کہاکہ اس کی بربریت کی کوئی حد نہیں ہے۔ واحد کو بے بنیاد الزامات کے تحت گرفتار کیا گیا تھا اور مجھے ان کے اہل خانہ کو تسلی دینے کی بھی اجازت نہیں ہے۔ یہاں تک کہ میری بیٹی التجا کوبھی نظربند کردیا گیا ہے کیونکہ وہ بھی وحید کے اہل خانہ سے ملنا چاہتی تھی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

Back to top button
Close
Close