جموں کشمیر

جموں میں نظربند روہنگیا کے متعلق سپریم کورٹ کا فیصلہ : کوئی رہائی نہیں ، ہولڈنگ سینٹر میں ہی رہیں گے

جموں و کشمیر،08؍ اپریل (ہندوستان اردو ٹائمز) سپریم کورٹ نے جموں میں زیر حراست 168 روہنگیا افراد کو میانمار واپس بھیجنے سے متعلق فیصلہ سنایا ہے۔ عدالت عظمیٰ نے کہا کہ روہنگیاؤں کو مقررہ عمل کی پیروی کیے بغیر میانمار نہیں بھیجا جائے گا ،ابھی کوئی رہائی نہیں ہوگی۔ ہر ایک کو ہولڈنگ سینٹر میں ہوگاہے۔کچھ روہنگیا لوگوں کی جانب سے ایڈوکیٹ پرشانت بھوشن نے ایک درخواست دائر کی تھی جس میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ ان لوگوں کو رہا کیا جائے اور ہندوستان میں ہی رہنے دیا جائے ۔

مرکزی حکومت نے اس کی سخت مخالفت کی تھی۔ پرشانت بھوشن نے مطالبہ کیا تھا کہ ہولڈنگ سینٹر میں رکھے گئے ان افراد کو ہندوستان سے واپس نہیں بھیجا جانا چاہئے۔ نیز ہندوستان میں بسنے والے تمام روہنگیاؤں کو مہاجر کا درجہ دیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ روہنگیا لوگ ہندوستان کی سلامتی کو خطرہ پہنچا رہے ہیں۔اس مطالبے کی مخالفت کرتے ہوئے سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے کہاتھا جس بین الاقوامی معاہدے کی بنیاد پر وہ فیصلہ آیا ، ہندوستان نے اس پر دستخط نہیں کیے۔ حکومت ہند نے اپنی خودمختاری اور قومی مفاد کی بنیاد پر بہت سے بین الاقوامی معاہدوں سے کنارہ کشی اختیار کی ہے۔ تشارمہتا نے بتایا تھا کہ میانمار حکومت سے حکومت ہند کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔ میانمار کی حکومت کی تصدیق کے بعد ہی ان افراد کو واپس بھیجا جائے گا۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close