دیوبند

جامعہ رحمانیہ عربیہ میں طلبہ کی دستار بندی

حافظ قرآن ہونا یہ طلبہ اور ان کے والدین کے لئے بہت بڑا شرف اور انعام ہے : قاری ضیاء الرحمن

ہاپوڑ؍ دیوبند، 20مارچ (رضوان سلمانی) جامعہ رحمانیہ ہاپوڑ میں ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں ادارہ سے فارغ ہونے والے طلبہ کی دستار بندی عمل میں آئی ۔ پروگرام کا آغاز جامعہ کے متعلم محمد ماہر کی تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ اس موقع پر مہمان خصوصی مولانا مشہودالرحمن جمالی مہتمم مدرسہ امدادالاسلام نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آخری پیغمبر سرکار دوعالم محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کے اس دنیا میں آنے کا ذکر تمام مذاہب کی کتابوں میں ملتا ہے اور تمام ہی پیغمبروں نے اپنے بعد آنے والے آخری پیغمبر کی پیشین گوئی کی ہے اور نجات وفلاح ان کے ذریعہ سے ملنے کی بشارت دی ہے۔ لہٰذا ہم ان کے ذریعہ لائے ہوئے دین پر ایمان لائیں اور اس پر عمل کریں۔

انہوں نے کہا کہ قرآن کریم بنی نوع ا نسان کے لئے مکمل ضابطہ حیات ہے ۔ محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے یہی اخلاق ہیں جو کچھ قرآن کریم میں ہیں وہی ہمیں اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے بتایا ہے اور وہی کرکے دکھایا ہے۔ انہوں نے مختلف احادیث شریفہ کے حوالے سے کہا کہ رسول خدا صلی اللہ علیہ وسلم وہی کہتے اور کرتے ہیں جو قرآن کہتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ قرآن کریم پوری دنیا اور تمام عالم انسانیت کے لئے رہتی دنیا تک کے لئے سرچشمہ ہدایت اور مینارۂ نور ہے۔ جامعہ کے مہتمم قاری ضیاء الرحمن قاسمی نے ادارہ سے فارغ ہونے والے طلبہ کا ختم قرآن کراکر ان کی دستار بندی کی ۔ انہوں نے کہا کہ حافظ قرآن ہونا یہ طلبہ اور ان کے والدین کے لئے بہت بڑا شرف اور انعام ہے۔ حافظ قرآن قیامت کے روز مقربین فرشتوں کے ساتھ ہوںگے ، ان کے والدین کو اللہ تبارک وتعالیٰ عزت کا تاج پہنائیں گے جس پر تمام انسان ان پر رشک کریں گے۔ پروگرام کی صدارت کررہے ۔ شیخ جامعہ مفتی محمد احتشام احمد قاسمی نے اپنے خطاب میں کہا کہ قرآن کریم ہمارے لئے راہ ہدایت ہے۔ اللہ تبارک وتعالیٰ نے اس کتاب کو لیلۃ القدر میں لوح محفوظ سے آسمانِ دنیا پر نازل کیا اور پھر وہاں سے جیسی ضرورت ہوتی گئی آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر اتارا گیا۔

انہوں نے کہا کہ قرآن کریم خالق کائنات کا کلام ہے ، اس کا پڑھنا ، سننا ، چھونا اور دیکھنا سب کچھ ثواب ہے۔ مولانا نے قرآن سیکھنے اور سکھانے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ ماہِ رمضان کی آمد ہے اس لئے اس مہینہ میں زیادہ تر قرآن مجید کی تلاوت اور دوسرے امورِ خیر کو انجام دیں ۔ انہو ںنے کہا کہ قرآنی تعلیمات کو عام کیا جائے او رہر گھر میں پہنچایا جائے ، قرآن کریم کو صحیح ودرست پڑھنے پر زیادہ زور دیا جائے۔ اس موقع پر ڈاکٹر عقیل الرحمن رحمانی، قاری فضل الرحمن انجم رحمانی، حکیم عبیداالرحمن رحمانی، حکیم ظل الرحمن رحمانی، چودھری عتیق احمد، حاجی سلیم احمد قریشی، مولانا عبدالرزاق قاسمی، مفتی عبدالمالک قاسمی، مولوی محمد مرتضیٰ ندوی ، مفتی طاہر قاسمی، ڈاکٹر محمد ایوب منصوری، حاجی محمد نعیم ، محمد ثاقب صدیقی، مولانا عمران سمیت قرب وجوار کے بڑی تعداد میں لوگ شریک ہوئے ۔ شیخ جامعہ کی دعا پر اجلاس اختتام پذیر ہوا۔

ہماری یوٹیوب ویڈیوز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button