بین الاقوامی

پاکستان : پنجاب میں اینٹی ملیریا ادویات سے کرونا مریضوں کا علاج

لاہور ؍ 8اپریل( آئی این ایس انڈیا ) پاکستان کے صوبے پنجاب میں ملیریا سے بچاؤ کی ادویات کرونا وائرس کے مریضوں کے لیے بھی کارگر ثابت ہو رہی ہیں۔ محکمہ? صحت پنجاب کا کہنا ہے کہ ان ادویات کے حوصلہ مند نتائج سامنے آئے ہیں۔ کرونا وائرس سے بچاو? کی ویکسین اب تک دنیا بھر میں کہیں دستیاب نہیں البتہ اس وبا سے متاثرہ مریضوں کا علاج اینٹی ملیریا ادویات سے کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی اینٹی ملیریا کی دوائی کلوروکوئن کو کرونا وائرس کے خلاف اہم ہتھیار قرار دیا تھا۔ منگل کو ہی صدر ٹرمپ کے انتباہ پر بھارت نے اینٹی ملیریا ادویات کی برآمد پر عائد پابندی ختم کی ہے۔ پاکستان میں بھی اینٹی ملیریا ادویات کرونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کو دی جا رہی ہے۔ اس سلسلے میں میو اسپتال لاہور کے چیف ایگزیکٹو پروفیسر ڈاکٹر اسد اسلم بتاتے ہیں کہ ملیریا سے بچاؤ کی ادویات کو کرونا کے مریضوں پر آزمایا گیا ہے جس کے بہتر نتائج سامنے آئے ہیں۔ڈاکٹر اسد اسلم نے بتایا کہ چین سے پاکستان آنے والے طبی ماہرین کے وفد نے بھی پاکستانی ماہرین کو کرونا کے مرض میں مبتلا مریضوں کو ملیریا سے بچاؤ یعنی اینٹی ملیریا ادویات دینے کی ہدایت کی ہے۔ ان کے بقول یہ وہ ادویات ہیں جن میں کلوروکوئن کا مرکب شامل ہے۔ اب تک کرونا وائرس سے متاثرہ 100 افراد کو یہ ادویات دی جاچکی ہیں جن میں سے 14 مریض صحت یاب ہو کر اپنے گھروں کو لوٹ چکے ہیں۔ یاد رہے کہ پاکستان میں جنوری 2011 میں اینٹی ملیریا کی ادویات سے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی لاہور میں 252 مریض ہلاک ہو گئے تھے۔ تحقیقات کے بعد یہ انکشاف ہوا تھا کہ ہلاک ہونے والے مریضوں کو اینٹی ملیریا ادویات کی زیادہ خوراک دی گئی تھی۔ڈاکٹر اسد اسلم کے مطابق کرونا وائرس کے شکار مزید 500 مریضوں کو اینٹی ملیریا ادویات دی جائیں گی۔ ان مریضوں کا ریکارڈ مرتب کیا جا رہا ہے۔ اْس کے بعد ہی حتمی طور پر یہ کہا جا سکے گا کہ ملیریا سے بچاؤ کی ادویات کرونا وائرس کے مریضوں کے لیے کارگر ثابت ہو رہی ہیں یا نہیں۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

جواب دیجئے

Back to top button
Close
Close