بین الاقوامی

جمعیت علماء روتہٹ نیپال نے ضلع پرشاسن کاریالےگئور میں (عیدالفطر اور عیدالاضحٰی کی تعطیل منسوخ ومسترد کیےجانےپر) داخل کیاگیاپن پتر

نیپال (انوار الحق قاسمی ) نیپال حکومت کی طرف سے عیدالفطر اور عیدالاضحٰی کی تعطیل منسوخ ومسترد کیےجانےپر نیپالی مسلمانوں میں عموما اور مسلم قائدین میں خصوصا بےچینی کی کیفیت پائی جارہی ہے۔
واقعی نیپال حکومت نے عیدالفطر اور عیدالاضحٰی کی چھٹی منسوخ کرکےمسلمانوں کے قلوب کو سخت تکلیف پہنچایاہے،اورحکومت کااس طرح کافیصلہ صادر کرنابالفاظ دیگراس ملک میں مسلمانوں کےوجود کوتسلیم نہ کرنےکے مترادف ہے،جب کہ یہ ایک حقیقت ہے کہ ملک نیپال میں مسلمانوں کی تعداد دیگراقوام کےمقابلےمیں بہت زیادہ نہیں، توبہت کم بھی نہیں ہے؛مگر پھربھی حکومت نیپال مسلمانوں کےساتھ اپنےفیصلہ کےذریعہ سوتیلے پن کاثبوت دےرہی ہے ،جوکسی بھی طرح نیپال حکومت کےلیےمناسب نہیں ہے۔یہ حکومت کانیپالی مسلمانوں کےوجود کوانکار کرنے اور نہ ماننےکاایک طریقہ ہے،جوبےحد افسوس ناک ہے۔

اس فیصلہ کی جس قدر بھی مذمت بیان کی جائے بہت ہی کم ہے اور یہ فیصلہ عصبیت ہی کی بنیاد پرکیاگیاہے۔
اس فیصلے پرنظر ثانی کرنے،اورعیدالفطر و عیدالاضحٰی کی تعطیل پھر سے منظور کرنے کےسلسلےمیں جمعیت علماء ضلع روتہٹ کی سرکردہ شخصیات نے آج بتاریخ4/اپریل 2021ء مطابق 21/شعبان المعظم 1442ھ بروز اتوار کو”ضلع پرشاسن کاریالے گئور” میں” گیاپن پتر” پیش کیاہے۔

سرکردہ شخصیات کےاسماء گرامی:(1 )حضرت مولانا محمد شوکت علی صاحب قاسمی مدنی صدرجمعیت علماء روتہٹ (2 )حضرت مولانا محمد قاری حنیف عالم صاحب قاسمی مدنی سکریٹری جمعیت علماء نیپال (3 )حضرت مولانا محمد عزرائیل صاحب مظاہری مرکزی ممبر جمعیت علماء نیپال(4 )حضرت مولانا محمد معین الدین صاحب قاسمی مرکزی ممبر جمعیت علماء نیپال(5 )حضرت مولانا محمد اسعد اللہ صاحب مظاہری مرکزی ممبر جمعیت علماء نیپال (6 )پروفیسر مقصود صاحب (7 )انجنئیر عبدالجبار صاحب مٹھیا خازن جمعیت علماء نیپال(8 )حضرت مولانا محمد درخشید انورصاحب(9)قاری شہابالدین صاحب عرفانی (10 )مولانا جواد صاحب (11 )مولانا صابر صاحب (12 )مولانا رحمت علی صاحب پترکار(13 )مولانا امجد صاحب قاسمی بسرام پور(14 )مفتی ذکاء اللہ صاحب مظاہری (15 )قاری نورالعین صاحب اور بھی دیگر حضرات ۔
امید کہ حکومت نیپال جلد اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرکے پھر سے عید الفطر اور عیدالاضحٰی کی تعطیل کومنظور کرکے ملک کےلاکھوں روٹھے ہوئے مسلمانوں کےقلوب کوخوش کرےگی۔

Urdutimes@123

ہندوستان اردو ٹائمز پر آپ سب کا خیر مقدم کرتے ہیں

Leave a Reply

متعلقہ خبریں

Back to top button
Close
Close